026-سُوۡرَةُ الشعراء

Granular/Forensic Analysis: Letters; vowels; syllables; words

Sura Recitation


طسٓمٓ .١

  • Three mutually conjoined/sewn consonants of Arabic alphabet ( أبجدية عربية‎); First consonant Ta , it has no additional sign/mark suggesting its pronunciation with its normal sound; the middle conjoined consonant Seen ـسـ and last Meem ـم both have above them ancillary glyph/ prolongation sign/mark which extends/stretches the sound value of the letter to which it is added. Prolongation sign/mark is found whenever the following word begins with still letter. Letter  ـسـ is followed by/ends in still "noon" and so is ـم ending with still "Mee'm-ميم" in pronunciation. [26:01]

عربی زبان کے حروف ’’ط‘‘اور باہمدگر حرف ’’س‘‘ اور "میم" بمع آواز کی طوالت کانشان۔

تِلْكَ ءَايَٟتُ ٱلْـكِـتَٟبِ ٱلْمُبِيـنِ .٢

  • These are the Aa'ya'at: unitary passages of the Book which is characteristically Explicit: conveyor of information in succinct, individuated, distinct and crystallized manner [26:02]

    اے رسولِ کریم! یہ معلوم کتاب(ام الکتاب) کےمندرجات( آیات )ہیں،جس کا وصف یہ ہے کہ اس کےمتن میں ہر ایک موضوع/topic-concept الگ تھلگ انداز میں مضمون/پیرائے کی صورت قلمبند کیا گیا ہےجو کہ ہر بات کو متمیز،حقائق مستور اور حقیقت  منکشف کر دینے والاہے۔

لَعَلَّكَ بَٟخِعٚ نَّفْسَكَ أَلَّا يَكُونُوا۟ مُؤْمِنِيـنَ .٣

  • You the Messenger will perhaps be exerting too much of yourself considering that otherwise they might not heartily become believers of it (Qur’ān).  [26:03]

ان لوگوں کی ہٹ دھرمی کو دیکھتے ہوئے آپ(ﷺ) شایداپنی تمام توانائیاں خرچ کر یں گے،اس خیال سے کہ وہ  بیان حقیقت(قرءان مجید)پر ایمان نہیں لائیں گے۔

إِن نَّشَأْ نُنَزِّلْ عَلَيْـهِـم مِّنَ ٱلسَّمَآءِ ءَايَةٙ

  • [You should not grieve for their non belief, relax since] Should Our Majesty so decide, We could send upon them from the Sky such an unprecedented demonstrative sign

اگر ہم چاہیں  تو آسمان سے ان پر ایک ایسی شہادت ـ(آیت/معجزہ)اتار دیں۔

فَظَلَّتْ أَعْنَٟقُهُـمْ لَـهَا خَٟضِعِيـنَ .٤

  • Whereupon their necks would have bent for that in humility. [26:04]

جس کو دیکھتے ہی ان کی گردنیں سایہ فگن ہو جائیں اس کے احترام کے لئے عاجز خاکساروں کی طرح۔

Root: ظ ل ل;  ع ن ق

وَمَا يَأْتِيـهِـم مِّن ذِكْرٛ مِّنَ ٱلرَّحْـمَـٰنِ مُحْدَثٍٛ إِلَّا كَانُوا۟ عَنْهُ مُعْـرِضِيـنَ .٥

  • And whatever warning-information comes to their notice anew quoted from the Reminder-Admonishment (Qur’ān) communicated by Ar'Reh'maan the Exalted; their response has been but to avoid that after having seen/read it.  [26:05]

ان کے پاس جب  کوئی بھی نوشت کائنات (قرءان مجید) میں درج تنبیہ ،جو الرَّحمٰن ذوالجلال والاکرام کی جانب سے آسان فہم تدوین میں خبر رساں ہے، کا تذکرہ کیا جاتا ہے وہ اسے سوائے اس انداز کے نہیں سنتے کہ اس دوران بھی  اس سے اعراض برتتے ہیں۔

فَقَدْ كَذَّبُوا۟ فَسَيَأْتِيـهِـمْ أَنۢبَـٰٓـؤُا۟ مَا كَانُوا۟ بِهِۦ يَسْتَـهْزِءُونَ .٦

  • Thereby. indeed they have publicly contradicted ["Zikr" Grand Qur’ān when this has reached to them]. Therefore, soon the news about which they people have playfully been jesting will come to them. [26:06]

جواب میں  انہوں نے برسر عام رسول اللہ اور کلام اللہ کو جھٹلایا ہے ؛ چونکہ جو بیان    کیا گیا ہے وہ حقیقت ہے اس لئےان تک جلد وہ خبریں پہنچ جائیں گی جن کے متعلق وہ استہزا،تمسخرانہ رویہ اپنائے ہوئے ہیں۔

Root: ھ  ز ء

أَوَلَمْ يَرَوْا۟ إِلَـى ٱلۡأَرْضِ

  • Have they not seenconsidered and reflected about the Earth

ان کی غفلت اس انتہا کی ہے کہ کیا انہوں نے زمین کی جانب بھی نہیں دیکھا۔

كَمْ أَنۢبَتْنَا فِيـهَا مِن كُلِّ زَوْجٛ كَرِيـمٍ.٧

  • As to how many Our Majesty have sprouted therein every sort of par excellence pairing. [26:07]

  • اندازہ لگائیں کہ   ہم جناب نے اس کے اندر کتنےہر ایک    عمدہ حیات بخش نباتات  کی جنس  کے جوڑے  کو اگانے کی صلاحیت رکھ دی    ہے۔

Root: ك ر م; ن ب ت

إِنَّ فِـى ذَٟلِكَ لَءَايَةٙۖ

  • Indeed there is a pointer in this phenomenon [unlimited creativity of their Sustainer Lord]

یقینا اس  مشاہدہ  فطرت  میں    ازخود غوروفکر کرنے والوں کے لئے حقیقت (معبود مطلق)کی جانب رہنمائی کرنے والی نشانی موجود ہے۔

وَمَا كَانَ أَكْثَرُهُـم مُّؤْمِنِيـنَ .٨

  • But majority of them (polytheist chieftains) believe not in the Messenger and Monotheism. [26:08]

مگران (عمائدین)کی اکثریت   رسول اللہ اور توحید کو ماننے والے نہیں  ہیں ۔

وَإِنَّ رَبَّكَ لَـهُوَ ٱلْعَزِيزُ ٱلرَّحِـيـمُ .٩

  • However, the fact remains, your Sustainer Lord is certainly He Who is Absolutely DominantAll-Mighty, the Fountain of Infinite Mercy. [26:09]

اور لوگ آپ (ﷺ) کے رب کے متعلق حقیقت جان لیں ،وہ جناب دائمی، ہر لمحہ، ہر مقام پر مطلق غالب فرمانروا ہیں، منبع رحمت ہیں۔


وَإِذْ نَادَىٰ رَبُّكَ مُوسَـىٰٓ أَنِ ٱئْتِ ٱلْقَوْمَ ٱلظَّـٟلِمِيـنَ .١٠

  • Narrate the episode when the Sustainer Lord of you the Messenger had called Mūsā [alai'his'slaam] commanding that, "You go to the nation of unjust tyrannical people [26:10]

آپ(ﷺ)اس واقعہ کو بھی  بیان /قلمبند کر دیں ؛ جب آپ کے رب نے موسیٰ(علیہ السلام)کو پکار کرظلم و ستم پر کاربند قوم کی جانب جانے کا کہا تھا۔

قَوْمَ فِرْعَوْنَۚ  أَلَا يَتَّقُونَ .١١

  • The nation of Fir'aoun/Pharaoh. Will not they fear and become cautious upon watching the displays?  [26:11]

فرعون کی قوم  کی جانب ۔کیا وہ  آیتیں (معجزات)دیکھ کر بھی حفاظت اور پناہ کے خواستگار نہیں ہوں گے!(جیسے آپ خوداسے کوبرا بنتے دیکھ کر خوف سے بھاگ گئے تھے)

قَالَ رَبِّ إِنِّـىٓ أَخَافُ أَن يُكَذِّبُونِ .١٢

  •  He (Mūsā alai'his'slaam) replied, "My Sustainer Lord! It is true that I am apprehensive they will contradict me [26:12]

انہوں(موسیٰ علیہ السلام)نے عرض کیا"میرے رب؛مجھے اس بات کا خدشہ ہے کہ وہ مجھے برسر عام جھٹلا دیں گے۔

وَيَضِيقُ صَدْرِى وَلَا يَنطَلِقُ لِسَانِـى

  • Moreover, my chest feels constricted-narrow, and my tongue is passive in movements - activitydoes not fluently articulate/express

اور میرا سینہ گھٹن اور تنگی محسوس کرتا ہے،اور میری زبان روانی سے حرکت کرنے سے قاصر ہے۔

Root: ط  ل ق;  ض ى ق; ل س ن The first reported case of Expressive aphasia - Sa'mri: "لا مساس no touching"

فَأَرْسِلْ إِلَـىٰ هَٟرُونَ .١٣

  • Therefore, You the Exalted do send for Ha'roon [whom you have appointed Messenger with me as my sharer [26:13]

آپ نے چونکہ ھارون کو میرے ساتھ رسول بنا دیا ہے اس لئے انہیں میرے پاس آنے کا پیغام دیں۔

وَلَـهُـمْ عَلَـىَّ ذَنۢبٚ فَأَخَافُ أَن يَقْتُلُونِ .١٤

  • And an accusation that lies against me is a strength point-argument available for them, thereby I apprehend they might execute me." [26:14]

اور  مجھ پرایک قتل کا الزام  ان کے لئے قانونی کاروائی  کا جواز بن سکتا ہےجس کے سبب مجھے خوف ہے کہ وہ مجھے قتل کر دیں"۔

Root: ذ ن ب

قَالَ كَلَّاۖ

  • He the Exalted said, "No, not at all

انہوں نے جواب دیا"قطعاً ایسا نہیں ہو گا۔

فَٱذْهَبَا بِـٔ​َايَـٟتِنَآ

  • "Now therefore [Haroon having joined and all your apprehensions removed] fearlessly you both go along with Our unprecedented signs - displays

اس لئے بے خوف و خدشہ آپ  دونوں فرعون کی جانب روانہ ہوں، عینی مشاہدہ  کے لئے میری شہادتوں (آیات/معجزات ) کی مصاحبت میں  جوتصور، تجربہ، سائنسی توجیح سے ماورائے اِدراک  ہوتے ہوئے اس حقیقت کی جانب  واضح رہنمائی کریں گی  کہ من جانب اللہ  سند اور برھان ہیں۔۔

إِنَّا مَعَكُـم مُّسْتَمِعُونَ .١٥

  • Indeed Our Majesty will be present there with you all, listening [26:15]

یقیناً ہم آپ سب کے ساتھ ہوں گے،ہر لمحہ ہم بات کو توجہ سے سنتے ہیں۔

فَأْتِيَا فِرْعَوْنَ فَقُولَآ إِنَّا رَسُولُ رَبِّ ٱلْعَٟلَمِيـنَ .١٦

  • Therefore, you both go straight to Fir'aoun/Pharaoh, whereupon both tell him, "Indeed we are Messenger of the Sustainer Lord of the Worldsall that exists [26:16]

اس طرح بے خوف و خدشہ دونوں  فرعون  کے پاس جاؤ،وہاں شاہی دربار میں پہنچ کر فرعون سے مخاطب ہو کرکہنا: "یہ حقیقت ہے کہ ہم تمام موجودات کے رب کے رسول ہیں جو آپ کے رب کا حکم نامہ لے کر آئے ہیں۔

أَنْ أَرْسِلْ مَعَنَا بَنِىٓ إِسْرَٟٓءِيلَ .١٧

  • The message is that you send with us Bani Iesraa'eel." [26:17]

پیغام یہ ہے کہ  آپ بنی اسرائیل کو ہمارے ساتھ روانہ کر دیں"۔

قَالَ أَلَمْ نُرَبِّكَ فِينَا وَلِيدٙا

  • He (Fir'aoun/Pharaoh) replied:  "Did we not nourish and raise you among us while you were a child?

اس(فرعون)نے کہا’’کیا ہم نے تجھے بچپن سے اپنے درمیان رکھ کر پرورش اور پروان نہیں چڑھایا۔

Root: ر ب و

وَلَبِثْتَ فِينَا مِنْ عُمُرِكَ سِنِيـنَ .١٨

  • And you lived among us many years of your age [26:18]

اور تو اپنی عمر کے کئی سال ہمارے درمیان  آباد رہا۔

Root: س ن ه; ع م ر; ل ب ث

وَفَعَلْتَ فَعْلَتَكَ ٱلَّتِـى فَعَلْتَ

  • And you did, an act of yours which you did once (subtle threat of reopening the accidental murder case)

اور تم نے  پہلی مرتبہ اپنی وہ حرکت کی۔یاد کر وہ پہلی مرتبہ کی ہوئی حرکت جو تونے کی تھی۔(زیر لب اس  اتفاقی قتل کیس کو کھولنے کی دھمکی)

وَأَنتَ مِنَ ٱلْـكَـٟفِرِينَ .١٩

  • And now you are one of the ungrateful". [26:19]

اور تواس وقت جو کر رہا ہے وہ تجھے ان میں شامل کر رہا ہے جوشکر گزار نہیں ہوتے‘‘۔

قَالَ فَعَلْتُـهَآ إِذٙا وَأَنَا۟ مِنَ ٱلضَّآلِّيـنَ .٢٠

  • He (Mūsā [alai'his'slaam]) said, "I had done that suddenly while I was lost in thought. [absorbed in deep thinking-28:15]; [26:20]

انہوں(موسیٰ علیہ السلام)نے کہا’’میں نے وہ حرکت اس وقت  کی تھی جب  اچانک مجھے زور سے پکارا گیا تھا جبکہ میں اس لمحے گہرے تفکر میں کھویا ہوا تھا۔(القصص۔۱۵  پڑھیں)

فَفَرَرْتُ مِنكُـمْ لَمَّا خِفْتُكُـمْ

  • Since I got the information of your counseling of getting me executed on the pretext of that incident instead of allowing law to take its own course, therefore, I escaped from you the moment I felt apprehensive of you people [see-28:20]

چونکہ مجھے علم ہو گیا تھا کہ آپ لوگ اس حادثے کو جواز بنا کرمجھے پھانسی دینے کا منصوبہ بنا رہے ہو اس لئے میں آپ سے فرار ہو گیا جوں ہی مجھے آپ لوگوں سے خوف محسوس ہوا۔

Root: ف ر ر

فَوَهَبَ لِـى رَبِّـى حُكْـمٙا

  • My decision was sequel to my Sustainer Lord had since granted me wisdom in my youth.

میرا یہ فیصلہ اس صلاحیت کا استعمال تھا جو میرے رب نے جوانی ہی میں مجھے   حکمت و دانائی سے نوازا تھا(حوالہ القصص۔۱۴)

Root: و ھ ب

وَجَعَلَنِى مِنَ ٱلْمُـرْسَلِيـنَ .٢١

  •  And He the Exalted has appointed me as one of the deputed Messengers towards you. [26:21]

اور ان جناب نے مجھے مختلف اقوام کی جانب بھیجے گئے میں شامل کر کے آپ لوگوں کی جانب بحثیت رسول پیغام دینے کے لئے مقرر فرمایا ہے۔

وَتِلْكَ نِعْمَةٚ تَمُنُّـهَا عَلَـىَّ أَنْ عَبَّدتَّ بَنِىٓ إِسْرَٟٓءِيلَ .٢٢

  • And as for the favour you are quoting obligation upon me, it is that you have enslaved Bani Iesraa'eel!" [26:22]

اور جہاں تک اس بھلائی کا تعلق ہے جس کا آپ مجھ پر احسان جتلا رہے ہیں اس حوالے سے کہ آپ نے بنی اسرائیل کو غلام بنا کر رکھا ہوا تھا‘‘۔

Root: م ن ن

قَالَ فِرْعَوْنُ وَمَا رَبُّ ٱلْعَٟلَمِيـنَ .٢٣

  • Fir'aoun (Pharaoh) said, "Explain whom you refer by the Sustainer Lord of the Worlds?"  [26:23]

فرعون نے کہا"یہ تو واضح کریں کہ رب العالمین کس کا حوالہ ہے"۔

قَالَ رَبُّ ٱلسَّمَٟوَٟتِ وَٱلۡأَرْضِ وَمَا بَيْنَـهُـمَآۖ

  • He (Mūsā alai'his'slaam defining the word "Worlds"]) said, "He the Exalted is the Sustainer Lord of the Skies and the Earth and all that which exists in between them

    انہوں (موسیٰ علیہ السلام)نے فرمایا"وہ آسمانوں اور زمین اور جو کچھ ان کے مابین ہے کے رب ہیں۔

إِن كُنتُـم مُّوقِنِيـنَ .٢٤

  • If you people (all in Levee) were who inferentially make sure attaining certainty." [26:24] (same in 44:07)

متذکرہ انکشاف کو تسلیم کر لو اگر تم لوگ اللہ تعالیٰ کے فرمودات پریقین کرنے والے ہو"۔

Root: ي ق ن

قَالَ لِمَنْ حَوْلَهُۥٓ أَلَا تَسْتَمِعُونَ .٢٥

  • He (Fir'aoun/Pharaoh feeling disturbed by pin drop silence while hearing him) addressing those who were around him said, "Are you people not attentively listening?" [26:25]

ہمہ تن گوش ماحول میں  دراندازی کرتے ہوئے اس(فرعون)نے ان قریبی رفقاء کو جو اس کے قریب بیٹھے تھے کہا"کیا تم لوگ انہماک سے نہیں سن رہے!"

قَالَ رَبُّكُـمْ وَرَبُّ ءَابَآئِكُـمُ ٱلۡأَوَّلِيـنَ .٢٦

  • He (Mūsā [alai'his'slaam]) said, "Sustainer Lord of the Worlds is the Sustainer Lord of you people and the Sustainer Lord of your earlier forefathers." [26:26]

انہوں (موسیٰ علیہ السلام)نے فرمایا"وہ رب العالمین آپ لوگوں کے رب ہیں اور آپ کے آباؤاجداد کے رب ہیں"۔

قَالَ إِنَّ رَسُولَـكُـمُ ٱلَّذِىٓ أُرْسِلَ إِلَيْكُـمْ لَمَجْنُونٚ .٢٧

  • He (Fir'aoun/Pharaoh) said, "Indeed the Messenger of you people; he who has been sent to you people, is certainly obsessively deluded." [26:27]

اس  نے(فرعون ، دخل دیتے ہوئے )کہا"در حقیقت تمہارا رسول ،وہ جسے تم لوگوں کی جانب بھیجا گیا ہے  میرے خیال میں یقیناًخبطی،فاسد خیالات میں گم کردہ ہو گیا ہے"۔

قَالَ رَبُّ ٱلْمَشْـرِقِ وَٱلْمَغْـرِبِ وَمَا بَيْنَـهُـمَآۖ

  • He (Mūsā [alai'his'slaam]) said, "Sustainer Lord of the Worlds is the Sustainer Lord of the East and the West and whatever exists in between them

انہوں (موسیٰ علیہ السلام)نے فرمایا"وہ جناب مشرق اور مغرب اور جو کچھ ان کے مابین موجود ہے سب کے رب ہیں۔

Root: ش ر ق ; غ ر ب

إِن كُنتُـمْ تَعْقِلُونَ .٢٨

  • You would conclude the same reality If you people (looking at the elite of Egypt present in  Levee) apply intellect to differentiate and comprehend." [26:28]

اگر آپ لوگ عقل و فکر سے کام لیں تو خود بھی اس حقیقت کو جان لیں گے"۔

Root: ع ق ل

قَالَ لَئِنِ ٱتَّخَذْتَ إِلَٟهًا غَيْـرِى لَأَجْعَلَنَّكَ مِنَ ٱلْمَسْجُونِيـنَ .٢٩

  • He (Fir'aoun) said, "I am determined that if you have adopted an iela'aha: Sustainer Lord who is other than me, I will henceforth most certainly render you as jailed/imprisoned." [26:29]

اس(فرعون)نے معبود مطلق کے بیان پر بے چین ہوتے ہوئے کہا"اگر آپ نے مجھ سے علاوہ کسی کو معبود مطلق اختیار کیا تو میں یقینی طور پر تجھے قیدیوں میں شامل کر دوں گا"۔

Root: س ج ن

قَالَ أَوَلَوْ جِئْتُكَ بِشَىءٛ مُّبِيـنٛ .٣٠

  • He (Mūsā [alai'his'slaam]) said, "You would do this even if I have come to you with a thing making distinctly evident what I have said about Sustainer Lord of Worlds? [26:30]

انہوں(موسیٰ علیہ السلام)نے جواب دیا"کیا آپ ایسا کریں گے اگرچہ میں ایک ایسی شئے کے ساتھ تیرے پاس آیا ہوں جو متبین کر دے گا کہ معبود مطلق کون ہے؟"

قَالَ فَأْتِ بِهِۦٓ إِن كُنتَ مِنَ ٱلصَّٟدِقِيـنَ .٣١

  • He (Fir'aoun) said, "Then you come with it if you were the truthful." [26:31]

اس(فرعون)نے کہا"اگر ایسا ہے تو جاؤاس کو لے کر  آؤ ا گر آپ سچ بولنے والے ہیں"۔

فَأَ لْقَىٰ عَصَاهُ فَإِذَا هِىَ ثُعْبَانٚ مُّبِيـنٚ .٣٢

  • Acceding to his demand, he (Mūsā [alai'his'slaam]) threw before their eyes his stick; the moment it fell on ground it was evidently a real serpent with hood: Cobra. [26:32]

جواب میں انہوں نے وہیں کھڑے کھڑے اپنے  ہاتھ میں تھامی عصا کو ان کی آنکھوں کے سامنے زمین پر ڈال دیا؛ توزمین پر گرتے ہی وہ سریحاً زندہ کوبرا بن گئی تھی۔

Root: ع ص و

وَنَزَعَ يَدَهُۥ فَإِذَا هِىَ بَيْضَآءُ لِلنَّٟظِـرِينَ .٣٣

  • And the moment he (Mūsā [alai'his'slaam]) drew out his hand, after putting in his armpit through neckband, she/palm was pure shining white without spot for the onlookers. [26:33]

اوروہ (موسیٰ علیہ السلام) اپنے ہاتھ کو  گریبان سے بغل میں لے گئے۔بغل سے چھو کر جوں ہی اسے نکالا تو ہتھیلی وہاں موجود دیکھنے والوں کے لئے سفید چمکدار تھی۔

Root: ن ز ع

قَالَ لِلْمَلَإِ حَوْلَهُۥٓ

  • He (Fir'aoun) said to Chiefs who were immediately around him

اس(فرعون)نے اپنے اردگرد قریبی سرداروں کو متوجہ کرتے ہوئے کہا:

Root: م ل ء

إِنَّ هَـٰذَا لَسَٟحِرٌ عَلِيـمٚ .٣٤

  • "Indeed, he is certainly a knowledgeable magician, player of illusory tricks. [26:34]

"یقیناً یہ صاحب توفریب نظر کے ماہر شعبدہ باز ہیں۔

Root: س ح ر

يُرِيدُ أَن يُخْرِجَكُـم مِّنْ أَرْضِكُـم بِسِحْرِهِۦ

  • He has the intention of ousting you people from your Land with his illusory tricks

یہ توچاہتا ہے کہ تم لوگوں کو تمہاری سلطنت کی حکمرانی سے اپنے جادوکے شعبدے سےنکال دے۔

Root: س ح ر

فَمَاذَا تَأْمُـرُونَ .٣٥

  • Therefore, to controvert his design, what you suggest/advise?" [26:35]

اس کے پیش نظر آپ لوگ کیا مشورہ دیتے ہیں"۔

قَالُوٓا۟ أَرْجِهْ وَأَخَاهُ

  • [not agreeing but instead of openly contradicting] They (Chieftains) said, "You defer granting time to him and his brother

انہوں(دوسرے سرداروں نے اس کے خیال سے بالواسطہ اتفاق نہ کرتے ہوئے)نے جواب دیا"آپ انہیں(موسیٰ علیہ السلام)اور ان کے بھائی کو وقت دیں۔

Root: ر ج و

وَٱبْعَثْ فِـى ٱلْمَدَآئِنِ حَٟشِـرِينَ .٣٦

  • And nominate/appoint gatherers in the towns [26:36]

اور آپ بستیوں میں  شعبدہ بازوں کو اکٹھا کرنے والوں کو مقرر کر کےبھیجیں۔

يَأْتُوكَ بِكُلِّ سَحَّارٍٛ عَلِيـمٛ .٣٧

  • They will come back to you along with every knowledgeable magician/illusionist/displayer of illusory tricks." [26:37]

وہ تمام کے تمام شعبدہ بازی کے علم میں ماہرین کو لے کر آ جائیں گے"۔

Root: س ح ر

فَجُمِعَ ٱلسَّحَرَةُ لِمِيقَٟتِ يَوْمٛ مَّعْلُومٛ .٣٨

  • In compliance to directive, the magicians - illusionists - demonstrators of illusory tricks were gathered at the appointed place on the known daythe day of the festival. [26:38]

اس کے بعدفرعون کے حکم کی تعمیل میں شعبدہ بازوں کو مقررہ مقام پر معلوم تہوار کے دن مظاہرہ دکھانے کے لئے اکٹھا کر لیا گیا۔

Root: س ح ر; و ق ت

وَقِيلَ لِلنَّاسِ هَلْ أَنتُـم مُّجْتَمِعُونَ .٣٩

  • And it was announced for general public whether "Are you people assembling with passion and taste [26:39]

اور  عوام الناس کے لئے اعلان کیا گیا؛"کیا تم لوگ شوق و ذوق سے اکٹھے ہو گے۔

لَعَلَّنَا نَتَّبِــعُ ٱلسَّحَرَةَ إِن كَانُوا۟ هُـمُ ٱلْغَٟلِبِيـنَ .٤٠

  • So that we affectionately enjoy - admire the magicians if they were the victorious." [26:40]

تاکہ ہم لوگ شعبدہ بازوں کو سراہیں اگر وہ مقابلے میں غالب ہو جائیں"۔

Root: س ح ر;  غ ل ب

فَلَمَّا جَآءَ ٱلسَّحَرَةُ قَالُوا۟ لِفِرْعَوْنَ

  • In compliance to the directive issued when the Magicians came they said to Fir'aoun:

چونکہ انہیں بتایا گیا کہ بادشاہ سلامت ان سے ملاقات کے خواہش مند ہیں اس لئے جوں ہی شعبدہ باز دربار میں پہنچے تو انہوں نے فرعون کو مخاطب کر کے کہا:

Root: س ح ر

أَىٕ​ِنَّ لَنَا لَأَجْرًا إِن كُنَّا نَـحْنُ ٱلْغَٟلِبِيـنَ .٤١

  • "Would there indeed for us be a sure reward if we were the victorious." [26:41]

"ہمارے لئے یقیناً انعام و اکرام ہو گا اگر ہم مقابلے میں غالب ہو جائیں گے"۔

Root: غ ل ب

قَالَ نَعَمْ وَإِنَّكُـمْ إِذٙا لَّمِنَ ٱلْمُقَرَّبِيـنَ .٤٢

  • He (Fir'aoun) replied, "Off course! and in that case as soon it would have happened you will certainly become part of close- confidants." [26:42]

اس(فرعون)نے جواب دیا"ہاں انعام ملے گا،بلکہ جب ایسا ہو جائے گا تو تم لوگ ان میں شمار ہو گے جو ہمارے قریبی ہیں"۔

قَالَ لَـهُـم مُّوسَـىٰٓ أَ لْقُوا۟ مَآ أَنتُـم مُّلْقُونَ .٤٣

  • Mūsā [alai'his'slaam] said to them (Magicians): "Display to public that which you perform as conjurers."

موسیٰ(علیہ السلام)نے ان سے کہا"آپ لوگ کرتب دکھائیں، سامنے زمین پر پھینکیں جو تم پھینک کر شعبدہ دکھاتے ہو"۔

فَأَلْقَوْا۟ حِبَالَـهُـمْ وَعِصِيَّـهُـمْ

  • Thereby, they started throwing their various ropes and sticks [in organized manner/equation-timing]

ان کے جواب کو سن کر انہوں(شعبدہ باز)نے ااپنے رسیاں اور چھڑیاں زمین پر پھینکنا شروع کر دیں۔

Root: ع ص و

وَقَالُوا۟ بِعِزَّةِ فِرْعَوْنَ إِنَّا لَنَـحْنُ ٱلْغَٟلِبُونَ .٤٤

  • While they pronounced, "By the might and dominance of Fir'aoun! Indeed we are certainly the victorious," [26:44]

اور انہوں نے نعرہ لگایا"فرعون کے جاہ و جلال کی قسم،یقیناً ہم بلاشبہ غلبہ پانے والے ہیں"۔

Root: غ ل ب

فَأَ لْقَىٰ مُوسَـىٰ عَصَاهُ فَإِذَا هِىَ تَلْقَفُ مَا يَأْفِكُونَ .٤٥

  • Thereupon, [in response to Allah's command 7:117;20:69] Mūsā [alai'his'slaam] threw his stick, whereby she suddenly [was a cobra] started swallowing what deceptionillusion they had created. [26:45]

پیغام سن کر موسیٰ (علیہ السلام) نے  اپنی عصا کو زمین پر پھینکا،تو وہ اچانک کوبرا سانپ بن کر اس کو نگلنا شروع ہو گئی جووہ شئے کو گھما پھرا کرفریب نظر کا شعبدہ دکھایا کرتے تھے۔

Root: ع ص و;  ل ق ف; ء ف ك

فَأُ لْقِىَ ٱلسَّحَرَةُ سَٟجِدِينَ .٤٦

  • Thereby, the illusionists were seen lain prostrating

حقیقت جان لینے پر شعبدہ باز زمین پر جھک کر سجدہ ریز ہو گئے۔

Root: س ج د;  س ح ر

قَالُوٓا۟ ءَامَنَّا بِرَبِّ ٱلْعَٟلَمِيـنَ .٤٧

  • [after prostration] They pronounced: "We have heartily believed in the Sustainer Lord of the Universes - all that exists [26:47]

انہوں نے پہلے کہا"ہم عالمین کے رب پر ایمان لے آئے ہیں۔

رَبِّ مُوسَـىٰ وَهَٟرُونَ .٤٨

  • The Sustainer Lord of Mūsā and Ha'roon [alai'him'slaam]." [26:48]

موسیٰ اور ھارون(علیہماالسلام)کے رب پر"۔

قَالَ ءَامَنتُـمْ لَهُۥ قَبْلَ أَنْ ءَاذَنَ لَـكُـمْۖ

  • He (Fir'aoun) said reprimanding, "How come you believed for him before I had granted permission for you people

اس (فرعون)نے ان شعبدہ بازوں کو مخاطب کر کے کہا"کیا تم اس(موسیٰ علیہ السلام)پر ایمان لے آئے ہو قبل اس کے کہ میں نے تمہارے لئے اجازت کا فرمان دیا؟

إِنَّهُۥ لَـكَبِيـرُكُمُ ٱلَّذِى عَلَّمَكُـمُ ٱلسِّحْرَ فَلَسَوْفَ تَعْلَمُونَۚ

  • Indeed he (Mūsā [alai'his'slaam]) is certainly your elder who has taught you the magic; the consequence of it you will soon come to know

حقیقت یہ ہے کہ وہ(موسیٰ علیہ السلام)تم لوگوں کا بڑا بزرگ ہے جس نے تمہیں  جادو کی تعلیم دی ہے۔تمہارا منصوبہ بے نقاب ہو گیا ہے اس لئے اس کا انجام تم جلد جان جاؤ گے۔

Root: س ح ر

لَأُقَطِّعَنَّ أَيْدِيَكُـمْ وَأَرْجُلَـكُـم مِّنْ خِلَٟفٛ

  • Since you have done this without my permission, thereby, I will soon surely detach-chain off your hands and feet from opposite sides;

چونکہ تم لوگوں نے میرے فرمان کے بغیر ایسا کیا ہے،اس لئے میں جلد ہی تمہارے ہاتھوں اور تمہارے پاؤں کو مخالف سمت میں منقطع کر دونگا۔

Root: ; ق ط ع

وَلَأُصَلِّبَنَّكُـمْ أَجْـمَعِيـنَ .٤٩

  • And I will surely crucify you all collectively." [26:49]

اور میں قسمیہ کہتا ہوں کہ میں  تمہیں  درختوں کے تنوں پرٹانگ کر سزائے موت دونگا؛ اجتماعی انداز میں"۔

قَالُوا۟ لَا ضَيْـرَۖ

  • They (the illusionists) replied, "Not at all a matter of harmful concern, we don't care

انہوں(شعبدہ بازوں نے ترکی بہ ترکی)نے جواب دیا"قطعا! کسی بھی قسم کے نقصان اور تکلیف کی ہمیں پرواہ نہیں۔

إِنَّـآ إِلَـىٰ رَبِّنَا مُنقَلِبُونَ .٥٠

  • Indeed We are reversers towards our Sustainer Lord [26:50]

حقیقت یہ ہے کہ ہم اپنے رب کی جانب پلٹ چکے ہیں۔

إِنَّا نَطْمَعُ أَن يَغْفِرَ لَنَا رَبُّنَا خَطَٟيَٟنَآ أَن كُنَّـآ أَوَّلَ ٱلْمُؤْمِنِيـنَ .٥١

  • Indeed we desire that for us our Sustainer Lord may forgive our omissions that we have become the first believers." [of His signs] [26:51]

حقیقت تو یہ ہے کہ ہمیں تو صرف یہ طمع ہے کہ ہمارے رب ہمارے لئے ہماری خطاؤں کو درگزر کرتے ہوئے معاف فرما دیں کہ ہم ایمان لانے والوں میں اولین ہیں"۔

Root: ط م ع; خ ط ء


وَأَوْحَيْنَآ إِلَـىٰ مُوسَـىٰٓ

  • Know it, Our Majesty verbally communicated to Mūsā [alai'him'slaam in Egypt]

تاریخ سے آگاہ  رہو؛یہ حقیقت ہے کہ ہم جناب نے   (مصر میں)موسیٰ(علیہ السلام)کو یہ پیغام وحی کیا تھا:

أَنْ أَسْرِ بِعِبَادِىٓ

  • That, "You travel by night with my servants

کہ’’ آپ میرے بندوں کو ساتھ لے کر رات کے کسی پہر روانہ ہو جائیں۔

Root: س ر ى

          Exodus - Eyewitness account

إِنَّكُـم مّتَّبَعُونَ .٥٢

  • Indeed you people will be chased." [26:52]

اس حقیقت سے مطلع رہیں کہ آپ لوگ  پکڑے جانے کی کاوش میں نقوش قدم پر پیچھا کئے جانے والے ہوں گے۔

فَأَرْسَلَ فِرْعَوْنُ فِى ٱلْمَدَآئِنِ حَٟشِـرِينَ .٥٣

  • Sequel to having informed of their from the City, Fir'aoun [Pharaoh] overwhelmed by fear did not immediately follow them but sent gatherers into the Forts-Army Encampments [with the message] [26:53]

چونکہ ان کے شہر سے نکل جانے کی خبر اسے  مل گئی تھی اس لئے  فرعون  نے خوف سے مغلوب ہونے کی وجہ سے فوری تعاقب کرنے کی بجائے فوجی چھاونیوں میں (یہ پیغام دے کر ) مجتمع کرنے والوں کو بھیجاۛ:

إِنَّ هَٟٓـؤُلَآءِ لَشِـرْذِمَةٚ قَلِيلُونَ .٥٤

  • "Indeed these are a band separated from main group, small in number [26:54]

"یقینا یہ توایک تھوڑے سے آدمیوں پر مشتمل جماعت ہے۔

وَإِنَّـهُـمْ لَنَا لَغَآئِظُونَ .٥٥

  • And indeed they for us are certainly arousers of rage [26:55]

اور درحقیقت یہ لوگ ہمیں غصہ دلا/انتقام پر آمادہ کر رہے ہیں۔

Root: غ ى ظ

وَإِنَّا لَجَمِيعٌ حَٟذِرُونَ .٥٦

  • And we are certainly a multitude, well equipped." [26:56]

اور ہم یقیناہتھیار بند/مسلح جمعیت ہیں"۔

فَأَخْرَجْنَٟهُـم مِّن جَنَّٟتٛ وَعُيُونٛ .٥٧

  • Thereby, Our Majesty caused them get out of gardens and springs[26:57]

اس کے نتیجے  میں ہم جناب نے  انہیں باغات اور چشموں سے مزین وسیع رہائش گاہوں سے نکال باہر کیا۔

وَكُنُوزٛ وَمَقَامٛ كَرِيـمٛ .٥٨

  • And treasures and excellent place. [26:58]

اور خزانوں اوراحترام و قار کے مقام سے نکال باہر کیا۔

Root: ك ر م; ك ن ز

كَذَٟلِكَ وَأَوْرَثْنَٟهَا بَنِىٓ إِسْرَٟٓءِيلَ .٥٩

  • And this is how they all went out following them [and got drowned] and Our Majesty made Bani Iesraa'eel the inheritors of that. [26:59]

اس طرح(فرعون اور اسکی فوج کر ڈبو کر)ان کوبے وارث کر دیا اور ہم جناب  نےبنی اسرائیل (جو وہیں رہ گئے تھے) کو ان تمام چیزوں کا وارث بنا دیا۔

Root: و ر ث

فَأَتْبَعُوهُـم مُّشْـرِقِيـنَ .٦٠

  • Thereupon, [on gathering in response to Pharaoh's call], they (Pharaoh and gathered troops) purposely chased them, they were heading towards East. [26:60]

چونکہ فوجی دستوں کا انتظار تھا اس لئے جب اکٹھے ہو گئے تو انہوں(فرعون اور لشکر)نے ان(بنی اسرائیل)کا مشرق کی جانب پیچھا کیا۔

Root: ش ر ق

فَلَمَّا تَرَٟٓءَا ٱلْجَمْعَانِ

  • Thereby, as soon when the two groups saw each other

اس طرح ان کے پہنچ جانے پر دونوں اجتماعات نے جوں ہی ایک دوسرے کو دیکھ لیا:

قَالَ أَصْحَـٟـبُ مُوسَـىٰٓ إِنَّا لَمُدْرَكُونَ .٦١

  • The companions of Mūsā [alai'him'slaam] said, "Indeed We will certainly be overtaken." [26:61]

موسیٰ(علیہ السلام)کے ساتھیوں نے سمندر کنارے ان سے کہا"یہ حقیقت لگ رہا ہے کہ ہم پکڑے جائیں گے"۔

Root: د ر ك

قَالَ كَلَّاۖ

  • He (Mūsā [alai'him'slaam]) said, "No, We will never be over taken [he was told this in Egypt-20:77]

انہوں(موسیٰ علیہ السلام )نے جواب دیا"بالکل نہیں!

إِنَّ مَعِىَ رَبِّـى سَيَـهْدِينِ.٦٢

  • Indeed my Sustainer Lord is with me; He the Exalted will soon show me the way." [how to make dry passage evident which He asked me in Egypt-20:77] [26:62]

حقیقت یہ ہے کہ میرے رب میرے ساتھ ہیں۔وہ جناب جلد مجھے راستہ بتائیں گے کہ وہ کہاں ہے"(جس کے متعلق مصر میں بتایا تھا،طہ۔77)۔

فَأَوْحَيْنَآ إِلَـىٰ مُوسَـىٰٓ أَنِ ٱضْـرِب بِّعَصَاكَ ٱلْبَحْرَۖ

  • Thereby, Our Majesty verbally conveyed to Mūsā [alai'his'slaam]: that "Strike the Gulf of Suez with the help of your staff (to emerge for them the dried up passage/Fringing reef-as earlier told 20:77]".

اس پر ہم جناب نے موسیٰ(علیہ السلام)کی جانب یہ صوتی پیغام بھیجا کہ اپنی لاٹھی  کی مددسے بحر سویز کو ضرب لگا کر اس راستے کو ابھار کر منظر میں لائیں (جیسے اس کے متعلق بتایا تھا۔طہ۔77)۔

Root: ع ص و; ض ر ب

فَٱنفَلَقَ

  • Sequel to his striking, it the dried passage became itself emerged becoming visible

ان کے ضرب لگانے پر وہ خشک راستہ از خود ابھر کر سطح پر نمایاں ہو گیا۔

Root: ف ل ق

فَكَانَ كُلُّ فِرْقٛ كَٱلطَّوْدِ ٱلْعَظِيـمِ .٦٣

  • Thereat, each segment - assemblage of its parts was like the Big Bone-Skeleton [Fringing reefs] stationed firmly at its position. [26:63]

چونکہ وہ آپس میں جڑے ہوئے تھے اس لئے ان میں ہر ایک ٹکڑا  اپنی جگہ پر مضبوطی سے جمابڑی ہڈی کے ڈھانچے کی مانند دکھائی دیتا تھا ۔

Exodus

وَأَزْلَفْنَا ثَـمَّ ٱلۡءَاخَرِينَ .٦٤

  • And Our Majesty meanwhile brought the other chasing party nearer. [26:64]

ان کے اس راستے پر گامزن ہو جانے پر ہم جناب  بعد میں آنے والی جماعت کو ساحل کر قریب لے آئے۔

Root: ز ل ف

وَأَنجَيْنَا مُوسَـىٰ وَمَن مَّعَهُۥٓ أَجْـمَعِيـنَ .٦٥

  • And Our Majesty deliveredrescued Mūsā [alai'his'slaam]; keeping safe above the surface, [skeleton like dried passage - emerged fringing reefs] and whoever was with him, all collectively. [26:65]

اور ہم جناب نے موسیٰ(علیہ السلام)اور جو کوئی بھی ان کی معیت میں تھا سطح آب پر محفوظ رکھتے ہوئے دشمن سے نجات دلا دی،، تمام  کواجتماعی انداز میں۔

ثُـمَّ أَغْـرَقْنَا ٱلۡءَاخَرِينَ .٦٦

  • Afterwards [when Pharaoh and his troops followed them on fringing reef-20:78] Our Majesty drowned the later group. [26:66]

بعد ازاں ہم جناب نے تعاقب میں آنے والوں کو غرق کر دیا۔

Root: غ ر ق

إِنَّ فِـى ذَٟلِكَ لَءَايَةٙۖ

  • Indeed there is a sign in the aforementioned phenomenoninstance of drowning

یقینا ً ایک سبق   اور انتباہ جو جگ بیتی سے درس لینے پر سننے والوں کو مائل کر سکتا ہے ایک قوم کی تاریخ کے اس بیان میں موجود اور مقصد ہے۔۔

وَمَا كَانَ أَكْثَرُهُـم مُّؤْمِنِيـنَ .٦٧

  • But most of them (the Jews) have not been the believers. [26:67]

یاد رہے؛ان بیتے لوگوں کی اکثریت رسول اللہ کو ماننے والے نہیں تھے۔

وَإِنَّ رَبَّكَ لَـهُوَ ٱلْعَزِيزُ ٱلرَّحِـيـمُ .٦٨

  • Realize the fact, Sustainer Lord of you the Messenger is certainly He Who is Absolutely Dominant, the Fountain of Infinite Mercy. [26:68]

اور لوگ آپ (ﷺ) کے رب کے متعلق حقیقت جان لیں ،وہ جناب دائمی، ہر لمحہ، ہر مقام پر مطلق غالب فرمانروا ہیں، منبع رحمت ہیں۔


وَٱتْلُ عَلَيْـهِـمْ نَبَأَ إِبْرَٟهِيـمَ .٦٩

  • And you the Messenger [Sal'lallaa'hoalaih'wa'salam] convey them the factual history of Iebra'heim [alai'his'slaam] [26:69]

اور آپ(ﷺ)ابراہیم(علیہ السلام)کے دور کی یہ خبر من وعن ان پر افشاں کر دیں :

إِذْ قَالَ لَأَبِيهِ وَقَوْمِهِۦ مَا تَعْبُدُونَ .٧٠

  • When he [Iebra'heim alai'his'slaam] said to his uncle and his nation: "What is it that you people keep worshipping?" [26:70](Replica 37:85)

جب انہوں نے اپنے چچاابو اور اپنی قوم سے استفسار کرتے ہوئے کہا تھا،"وہ کیا ہے جس کی آپ لوگ بندگی/پرستش کرتے ہیں؟"۔

قَالُوا۟ نَعْبُدُ أَصْنَامٙا

  • They replied stating, "We worship various statues

 انہوں نے کہا"ہم اصنام(مختلف دیوتاؤں)کی پرستش کرتے ہیں۔

فَنَظَلُّ لَـهَا عَٟكِفِيـنَ .٧١

  • Thereby, we gather in groups during daytime, we visit and sit as devotee for them, temporarily suspendingleaving aside disposal and management of other affairs of life". [26:71]

اس لئے اظہار عبودیت کے لئے ہم ان کے لئے مشاغل دنیا کو چھوڑ کر ان کے پاس کچھ دیر کے لئے حاضر ہوتے اور بیٹھتے ہیں"۔

Root: ظ ل ل;  ع ك ف

قَالَ هَلْ يَسْمَعُونَكُـمْ إِذْ تَدْعُونَ .٧٢

  • He [Iebra'heim alai'his'slaam] asked them, "Do they listen you when you people address them? [26:72]

انہوں(ابراہیم علیہ السلام)نے پوچھا"آپ بتائیں کیا یہ (معبودان)آپ لوگوں کو سنتے ہیں جب آپ انہیں پکارتے ہیں۔

أَوْ يَنفَعُونَكُـمْ أَوْ يَضُـرُّونَ .٧٣

  • And/Or do they cause you people any benefit and/or do they cause any harm to you?" [26:73]

یا/اور کیا وہ تم لوگوں کو کوئی فائدہ دینے یا کسی قسم کا نقصان پہنچانے کی صلاحیت رکھتے ہیں؟"

قَالُوا۟ بَلْ وَجَدْنَآ ءَابَآءَنَا كَذَٟلِكَ يَفْعَلُونَ .٧٤

  • They said, "No, they do not do that; but the fact is that we found our forefathers that they kept doing like this". [26:74]

انہوں نے جواب دیا؛"نہیں ایسی کوئی بات نہیں؛بلکہ ہم ایسا اس لئے کرتے ہیں کہ ہم نے اپنے آباؤاجداد کو دیکھا تھا وہ اسی طرح کیا کرتے تھے"۔

قَالَ أَفَرَءَيْتُـم مَّا كُنتُـمْ تَعْبُدُونَ .٧٥

  • He [Iebra'heim alai'his'slaam] asked them, "Have you people then seen - discerned that which you have habitually been worshippingdemonstrating allegiance [26:75]

انہوں (ابراہیم علیہ السلام)نے کہا"کیاتم نے واقعی اسے دیکھا ہے جس کی تم لوگ پوجا کرتے رہے ہو۔

أَنتُـمْ وَءَابَآؤُكُمُ ٱلۡأَقْدَمُونَ .٧٦

  • You people and your fathers of farther earlier period? [26:76]

تم لوگوں نے اور تمہارے آباواجدا،وہ جو یہ کرنے والے قدیم ترین تھے؟"

Root: ق د م

فَإِنَّـهُـمْ عَدُوّٚ لِـىٓ إِلَّا رَبَّ ٱلْعَٟلَمِيـنَ .٧٧

  • Hence/for reason they all whom you worship, except the Sustainer Lord of the Worlds, are enemies for me[26:77]

چونکہ میں نے انہیں جامد و ساکت ہر صلاحیت سے عاری دیکھا ہے اس لئے رب العالمین کے علاوہ  معبود مانے جانے کے سبب  میرے لئے یقیناًوہ دشمن ہیں۔

ٱلَّذِى خَلَقَنِى فَهُوَ يَـهْدِينِ .٧٨

  • The Sustainer Lord of the Worlds is Who created me, thereby, He guides me [26:78]

رب العالمین وہ ہیں جنہوں نے مجھے تخلیق کیا۔چونکہ تخلیق کار کے ذمہ ہدایت دینا ہوتا ہے اس لئے وہ جناب مجھے  جانب منزل ہدایت دیتے رہتے ہیں۔

وَٱلَّذِى هُوَ يُطْعِمُنِى وَيَسْقِيـنِ .٧٩

  • And He is the One Who feeds me and gives me the drink [26:79]

اور رب العالمین وہ جناب ہیں جو مجھے کھانے اور مجھے پلانے کا انتظام فرماتے ہیں۔

Root:  س ق ى; ط ع م

وَإِذَا مَرِضْتُ فَهُوَ يَشْفِيـنِ .٨٠

  • And when I fell sick - suffered a disease, thereat, He the Exalted recuperates me [26:80]

اور جب میں بیمار ہوتا ہوں تو وہ جناب ہی ہیں جو مجھے شفایاب کرتے ہیں۔

Root: م ر ض

وَٱلَّذِى يُمِيتُنِى ثُـمَّ يُحْيِىنِ .٨١

  • And He is the One Who will cause me to die natural death, thereafter [lapse of time till resurrection moment] He will cause me to revive to life [26:81]

اور وہ جناب ہیں جو مجھے طبعی موت سے ہمکنار کریں گے،بعد ازاں(حیات نو دئیے جانے کے دن)وہ مجھے حیات نو دیں گے۔

وَٱلَّذِىٓ أَطْمَعُ أَن يَغْفِرَ لِـى خَطِيٓــَٔتِى يَوْمَ ٱلدِّينِ .٨٢

  • And He is the One from Whom I desire and expect that He will forgive for me my omissions on the Day of Requital". [26:82]

”اور وہ جناب ہیں جن سے میں آرزو کرتا ہوں کہ جزا و سزا کے دن(یوم الد ین)میرے لئے میری خطائیں بخش دیں گے۔“

Root: ط م ع; خ ط ء

رَبِّ هَبْ لِـى حُكْـمٙا وَأَلْحِقْنِى بِٱلصَّٟلِحِيـنَ .٨٣

  • "My Sustainer Lord! Do grant me wisdomdecisive ability to distinguish and do joinrepute me with the Righteous. [26:83]

انہوں نے دعا فرمائی "میرے رب!آپ جناب  ہر موقع محل میں مجھے قوت فیصلہ، امتیازی ذہانت سے بہرہ مند فرمائیں۔اور مجھے اصلاح کرنے والوں کی شہرت نصیب فرمائیں۔

Root: ل ح ق; و ھ ب

وَٱجْعَل لِّـى لِسَانَ صِدْقٛ فِـى ٱلۡءَاخِـرِينَ .٨٤

  • And You the Exalted declare for me reputationmention of truthfulness on the tongues of the later people. [26:84]

(ابراہیم علیہ السلام نے مزید دعا فرمائی)اور آپ جناب میرے متعلق گفتگو اور شہرت بعد کے لوگوں کی زبان پر سچائی/صادق ہونے کی رکھیں۔

Root: ل س ن

وَٱجْعَلْنِى مِن وَرَثَةِ جَنَّةِ ٱلنَّعِيـمِ .٨٥

  • And do declare-assign me leadership among share holders in the Paradise of Delight. [26:85]

اور آپ جناب  لوگوں کوپرمسرت جنت کے وارث بنانے والوں میں مجھے شامل قرار دیں۔

وَٱغْفِرْ لِأَبِـىٓ إِنَّهُۥ كَانَ مِنَ ٱلضَّآلِّيـنَ .٨٦

  • And do forgive for my uncle, indeed he has been amongst the neglectfull astray. [26:86]

اور آپ جناب میرے چچا ابو کو معاف فرما دیں۔یہ حقیقت ہے کہ وہ اب تک منحرف گم کردہ راہ لوگوں میں شامل ہے۔

وَلَا تُخْزِنِـى يَوْمَ يُبْعَثُونَ .٨٧

  • And You the Exalted are earnestly requested not to cause disgrace for me on the Day they are revived to life-resurrected. [26:87]

”اور میرے رب! مجھے اُس دن  ازراہ کرم رسوا نہ کریں جب لوگ اٹھائیں جائیں گے‘‘۔

Root: خ ز ى

يَوْمَ لَا يَنفَعُ مَالٚ وَلَا بَنُونَ .٨٨

  • Neither wealth nor sons will yield benefit to them on that Day of Resurrection— [26:88]

یہ وہ دن ہے جس میں  کافروں کانہ مال و دولت اور نہ طاقت کا مظہر بیٹے کوئی فائدہ پہنچا سکیں گے۔

إِلَّا مَنْ أَتَـى ٱللَّهَ بِقَلْبٛ سَلِيـمٛ .٨٩

  • Except the one who came to Allah the Exalted with a submissive heart." [26:89]

یہ فائدہ مند نہیں ہوں گے سوائے اس شخص کے  لئے جو اللہ تعالیٰ کے حضور اسلام کی محبت سے لبریز قلب لئے ہوئے حاضر ہوا۔

وَأُزْلِفَتِ ٱلْجَنَّةُ لِلْمُتَّقِيـنَ .٩٠

  • And the Paradise shall be caused/brought nearer for those who sincerely endeavour to attain salvation. [26:90]

 اور جنت کو اپنے آپ کو تندہی سے محتاط اورغلط روش سے محفوط رکھنے والوں  کے نظارہ کے لئے قریب کر دی گئی۔  

Root: ز ل ف

وَبُرِّزَتِ ٱلْجَحِـيـمُ لِلْغَاوِينَ .٩١

  • And the Hell-Prison shall be manifestly exposed for the divagating ones [26:91]

 اور جھلستی زندان کو ان لوگوں کے نظارہ کے لئے قریب کر دیا گیا جوشیطانی ،راست سے بھٹکے برباد ہوئے  لوگ ہیں ۔

Root: غ و ى; ج ح م

وَقِيلَ لَـهُـمْ أَيْنَ مَا كُنتُـمْ تَعْبُدُونَ .٩٢

  • And a question is posed for them, "Where are those deities which you people used to worship/pronounce allegiance for [26:92]

 اور ان سے پوچھا گیا"کہاں ہیں وہ جن کی تم لوگ بندگی/پوجا کیا کرتے تھے۔

مِن دُونِ ٱللَّهِ

  • Besides Allah the Exalted?

اللہ تعالیٰ سے ابتدا کرتے ہوئے ان کے علاوہ۔

هَلْ يَنصُرُونَكُـمْ أَوْ يَنتَصِرُونَ .٩٣

  • Do those deities help you people or can they help their selvesconsciously react in self defense?" [26:93]

 بتاؤ،کیا وہ تم لوگوں کی مدد کر رہے ہیں یا خود اپنی مدد کرنے کے لئے کچھ کر سکتے ہیں"۔

فَكُبْكِبُوا۟ فِيـهَا هُـمْ وَٱلْغَاوُۥنَ .٩٤

  • Thereupon, they (the idol worshippers) will be dumped therein (Hell-Prison), they and the divagating ones [26:94]

نتیجتاًانہیں  اس میں پھینک دیا گیا،انہیں(مشرکین)اور حدوں سے تجاوز وشیطانی ،راست سے بھٹکے برباد ہوئے  لوگ ہیں۔

Root: غ و ى; ك ب ك ب

وَجُنُودُ إِبْلِيسَ أَجْـمَعُونَ .٩٥

  • And the accomplices of Iebless - Satan, they all collectively. [26:95]

 اور ابلیس کے ساتھیوں کو؛سب کو یکجا کر کے۔

قَالُوا۟ وَهُـمْ فِيـهَا يَخْتَصِمُونَ .٩٦

  • They said, while they were therein (Hell-prison) mutually disputingexchanging heated arguments [26:96]

انہوں نے جہنم میں آپس میں بڑھ چڑھ کر مباحثہ کرتے ہوئے کہا:

Root: خ ص م

تَٱللَّهِ إِن كُنَّا لَفِى ضَلَٟلٛ مُّبِيـنٍٛ .٩٧

  • "By Allah the Exalted, Indeed we were plunged in manifest straying [26:97]

"اللہ تعالیٰ کی قسم!حقیقت صرف یہ ہے کہ ہم حکمت و دانائی کو کھوئی ہوئی حالت میں صریح غفلت میں سرگرداں تھے۔

إِذْ نُسَوِّيكُـم بِرَبِّ ٱلْعَٟلَمِيـنَ .٩٨

  • When obeying you as trailblazers we were equating your word with the command of Sustainer Lord of Worlds [26:98]

جب اکابرین مان کر ہم تم لوگوں کی باتوں کو تمام موجودات کے رب کے فرمان جیسا قرار دیتے تھے۔

وَمَآ أَضَلَّنَآ إِلَّا ٱلْمُجْرِمُونَ .٩٩

  • And none strayed us except the criminals [26:99]

اور ہمیں سوائے مجرمانہ ذہنیت اور کردار رکھنے والوں کے کسی اور نے گم کردہ راہ نہیں کیا تھا۔

فَمَا لَنَا مِن شَٟفِعِيـنَ .١٠٠

  • Thereby, there is none of the intercessors for us [26:100]

چونکہ ہم نے فقط مجرم قرار پائے لوگوں کی پیروی کی تھی اس لئے ہمارے دفاع کے لئے سفارش کرنے والوں میں سے کوئی بھی ہماری مدد پرآمادہ نہیں ہے۔

Root: ش ف ع

وَلَا صَدِيقٍٛ حَـمِيـمٛ .١٠١

  • And neither is there for us any sincere - aggrieved friend [26:101]

اور  نہ ہمارا کوئی ہم راز دوست کچھ بھی مدد کر سکتا ہے۔

فَلَوْ أَنَّ لَنَا كَرَّةٙ فَنَكُونَ مِنَ ٱلْمُؤْمِنِيـنَ .١٠٢

  • Therefore [since we have realized and accepted guilt] had for us any chance to return, thereby, we will become the believers." [26:102]

چونکہ اب ہم نے دیکھ لیا اور ذہن کے دریچے کھل گئے ہیں اس لئے اے کاش ہمارے لئے ایک اور موقع ہوتا تو ہم واپس جا کر صدق قلب سے  ایمان لانے والوں کے طرز عمل پر عمل پیرا ہو جائیں"۔(الشعراء۔۱۰۲)

إِنَّ فِـى ذَٟلِكَ لِءَايَةٙۖ

  • Indeed there is a point for pondering in this disclosure

یقینا ً ایک سبق   اور انتباہ جو جگ بیتی سے درس لینے پر سننے والوں کو مائل کر سکتا ہے ایک قوم کی تاریخ کے اس بیان میں موجود اور مقصد ہے۔

وَمَا كَانَ أَكْثَرُهُـم مُّؤْمِنِيـنَ .١٠٣

  • But most of  them have not been the believers. [26:103]

یاد رہے؛ان بیتے لوگوں کی اکثریت رسول اللہ کو ماننے والے نہیں تھے۔

وَإِنَّ رَبَّكَ لَـهُوَ ٱلْعَزِيزُ ٱلرَّحِـيـمُ .١٠٤

  • However, fact remains, the Sustainer Lord of you the Messenger is certainly He Who is Absolutely Dominant, the Fountain of Infinite Mercy. [26:104]

اور لوگ آپ (ﷺ) کے رب کے متعلق حقیقت جان لیں ،وہ جناب دائمی، ہر لمحہ، ہر مقام پر مطلق غالب فرمانروا ہیں، منبع رحمت ہیں۔


كَذَّبَتْ قَوْمُ نُوحٍٛ ٱلْمُـرْسَلِيـنَ .١٠٥

  • The nation of Noah [alai'his'slaam] had publicly contradicted those who were sent as Messengers [26:105]

تاریخ جان لو؛ نوح(علیہ السلام)کی قوم نے ان کی جانب بھیجے گئے رسولوں کوبرسر عام جھٹلایا تھا۔

إِذْ قَالَ لَـهُـمْ أَخُوهُـمْ نُوحٌ أَلَا تَتَّقُونَ .١٠٦

  • When their brother, Noah [alai'his'slaam] said to them "Would you people not protect yourselves? [26:106]

جب ان کے بھائی نوح(علیہ السلام)نے ان کے لئے ہدایت دیتے ہوئے کہا"کیا تم لوگ حقیقت کو جان لینے کے باوجود اپنے آپ کوخوفناک نتائج و عواقب سےمحفوظ کرنے کے لئے پناہ کے خواستگار نہیں بنو گے؟

إِنِّـى لَـكُـمْ رَسُولٌ أَمِيـنٚ .١٠٧

  • Indeed I am for you people the trusted Messenger [26:107]

یقینامیں مجھے سونپی گئی ذمہ داریوں کو کماحقہ سرانجام دینے والا رسول ہوں جسے خاص طور پر تم لوگوں کو راہ ہدایت کی جانب آنے کی دعوت اور متنبہ کرنے کے لئے بھیجا گیا ہے۔

فَٱتَّقُوا۟ ٱللَّهَ

  • Therefore, you people sincerely endeavour to attain the protection from Allah the Exalted,

اس لئے تم لوگ تندہی سے محتاط رہتے ہوئے اللہ تعالیٰ سے پناہ کے خواستگار رہو۔

 وَأَطِيعُونِ .١٠٨

  • And listen and accept my word. [26:108]

اور میرے کہے کو تم لوگ تسلیم کرو۔

وَمَآ أَسْـٔ​َلُـكُـمْ عَلَيْـهِ مِنْ أَجْرٍۖٛۖ

  • And I do not ask you people; for that discharging the entrusted trust, any worldly remuneration

اوراس پر غور کرو میں اس (کتاب اللہ)کے اشاعت، تبلیغ اور تعلیم دینے کے لئے تم سے مال دینے کا سوال نہیں کرتا۔

إِنْ أَجْرِىَ إِلَّا عَلَـىٰ رَبِّ ٱلْعَٟلَمِيـنَ .١٠٩

  • My reward is due on none except upon the Sustainer Lord of Worlds [Whose Trust/Assignment is being discharged]. [26:109]

اس لئے کہ میرا ان خدمات کا اجر صرف اور صرف   تمام جہانوں کے پروردگار اور فرمانروا پر واجب الادا ہے۔

فَٱتَّقُوا۟ ٱللَّهَ

  • Therefore, you people sincerely endeavour to attain the protection from Allah the Exalted

اس لئے تم لوگ تندہی سے محتاط رہتے ہوئے اللہ تعالیٰ سے پناہ کے خواستگار رہو۔

 وَأَطِيعُونِ .١١٠

  • And listen and accept my word." [26:110]

اور میرے کہے کو تم لوگ تسلیم کرو۔

قَالُوٓا۟ أَنُؤْمِنُ لَكَ 

  • They (the ruling elite) replied, "Should we believe for you

انہوں(عمائدین مشرکین)نے جواب دیا"کیا تمہاری خاطر ہم تیرے کہے کو مان لیں۔

وَٱتَّبَعَكَ ٱلۡأَرْذَلُونَ .١١١

  • While only they have followed you who are vilest - riffraff among us." [26:111]

جب کہ حال یہ ہے تمہاری اتباع صرف معاشرے کے پست ترین طبقے کے لوگوں نے کی ہے"۔

Root: ر ذ ل

قَالَ وَمَا عِلْمِى بِمَا كَانُوا۟ يَعْمَلُونَ .١١٢

  • He (Noah alai'his'slaam) said, "My responsibility was to caution them, but I have no knowledge about what they people were doing in the past; [26:112]

انہوں(نوح علیہ السلام)نے جواب دیا"میرا کام انہیں خبردار کرنا تھا مگر میرے علم میں وہ نہیں جو وہ ماضی میں عمل کرتے رہے ہیں۔

إِنْ حِسَابُـهُـمْ إِلَّا عَلَـىٰ رَبِّـىۖ

  • Because their accountability is but upon my Sustainer Lord

کیونکہ ان کا احتساب کرنا فقط میرے رب کا استحقاق ہے۔

لَوْ تَشْعُـرُونَ .١١٣

  • You may not have said that had you been in habit of reflecting [the point]. [26:113]

آپ لوگ یہ بات نہ کہتے اگر شعور کرتے۔

وَمَآ أَنَا۟ بِطَارِدِ ٱلْمُؤْمِنِيـنَ .١١٤

  • And nor I am the one to ever drive away the believers [26:114](Read with 11:29)

اور میں ان لوگوں کو اپنے سے کسی بھی لمحے دور  نہیں کروں گا جو دل کی شاد سے اللہ تعالیٰ کے ہدایت نامہ پر ایمان لے آئے ہیں۔

Root: ط ر د

إِنْ أَنَا۟ إِلَّا نَذِيرٚ مُّبِيـنٚ .١١٥

  • Since I am but an Awakener - Revivalist - Admonisher - Warner making for people things manifest and crystal clear." [26:115]

اوریہ حقیقت ہے کہ  میری ذمہ داری اور کردار تم لوگوں کے لئےکفر و نافرمانیوں کے  ناگفتہ بہ نتایج و عواقب سے  فقط متنبہ کرنے والے کی ہے ،انتہائی واضح،متبین،دو ٹوک انداز میں متنبہ کرنا"۔

قَالُوا۟ لَئِن لَّمْ تَنْتَهِ يَٟنُوحُ لَتَكُونَنَّ مِنَ ٱلْمَرْجُومِيـنَ .١١٦

  • They (the ruling elite) threatened him, "Mind it that if you desisted not, O Noah, certainly you will, we swear, be amongst those who are stoned." [26:116]

انہوں(عمائدین)نے  دہمکی دیتے ہوئےکہا"اگر تو، اے نوح ،از خود اس تبلیغ سے باز نہ آیا تو خبردار ہو جاؤ تجھے سنگسار کر دیا جائے گا"۔

Root: ر ج م

قَالَ رَبِّ إِنَّ قَوْمِى كَذَّبُونِ .١١٧

  • He (Noah [alai'his'slaam]) prayed, "O my Sustainer Lord, indeed my nation has publicly contradicted me. [26:117]

انہوں(نوح علیہ السلام)نے دعا فرمائی"میرے رب؛یہ حقیقت ہے کہ میری قوم نے مجھے برملا جھٹلا دیا ہے۔

فَٱفْتَحْ بَيْنِى وَبَيْنَـهُـمْ فَتْحٙا

  • Therefore, do conclude the matter between me and between them quite openlydecisively

چونکہ وہ ہٹ دھرمی پر قائم ہیں اس لئے آپ جناب میرے اور ان کے درمیان فیصلہ فرما دیں،حتمی اور مطلق انداز میں۔

Root:  ف ت ح

وَنَجِّنِى وَمَن مَّعِى مِنَ ٱلْمُؤْمِنِيـنَ .١١٨

  • And please rescue me and those who are with me as the believers. [26:118]

اور مجھے ان کی صحبت سے نجات دیں اور صدق قلب سے ایمان لانے والوں میں ہر ایک کو جو میرے شانہ بشانہ ہے"۔

فَأَنجَيْـنَٟهُ وَمَن مَّعَهُۥ فِـى ٱلْفُلْكِ ٱلْمَشْحُونِ .١١٩

  • Thereupon Our Majesty rescued him, and those who were believers with him, in the loaded Watercraft. [26:119]

  • چونکہ اتمام حجت اور عنایت کردہ مہلت کا وقت قریب اختتام تھا اس لئے ہم جناب نے انہیں(نوح علیہ السلام)اور جو کوئی ان کے ہمراہ تھا سامان سے لدی کشتی میں سوار کر کے بحافظت وہاں سے نکال دیا۔

Root: ف ل ك

ثُـمَّ أَغْـرَقْنَا بَعْدُ ٱلْبَاقِيـنَ .١٢٠

  • Afterwards the sailing of the Watercraft, Our Majesty drowned the remaining ones. [26:120]

بعد ازاں ہم جناب نے باقی ماندہ وقت سے پیچھے رہ جانے والوں کوڈبو دیا۔

Root: غ ر ق; ب ق ى

إِنَّ فِـى ذَٟلِكَ لِءَايَةٙۖ

  • Indeed there is a point for pondering in this disclosure

یقینا ً ایک سبق   اور انتباہ جو جگ بیتی سے درس لینے پر سننے والوں کو مائل کر سکتا ہے ایک قوم کی تاریخ کے اس بیان میں موجود اور مقصد ہے۔۔

وَمَا كَانَ أَكْثَرُهُـم مُّؤْمِنِيـنَ .١٢١

  • But most of  them have not been the believers. [26:121]

یاد رہے؛ان بیتے لوگوں کی اکثریت رسول اللہ کو ماننے والے نہیں تھے۔

وَإِنَّ رَبَّكَ لَـهُوَ ٱلْعَزِيزُ ٱلرَّحِـيـمُ .١٢٢

  • However, fact remains, the Sustainer Lord of you the Messenger is certainly He Who is Absolutely Dominant, the Fountain of Infinite Mercy. [26:122]

اور لوگ آپ (ﷺ) کے رب کے متعلق حقیقت جان لیں ،وہ جناب دائمی، ہر لمحہ، ہر مقام پر مطلق غالب فرمانروا ہیں، منبع رحمت ہیں۔


كَذَّبَتْ عَادٌ ٱلْمُـرْسَلِيـنَ .١٢٣

  • The people of Aad publicly contradicted those who were sent as Messengers [26:123]

تاریخ جان لو؛  قوم  عاد نے ان کی جانب بھیجے گئے رسولوں کوبرسر عام جھٹلایا تھا۔

إِذْ قَالَ لَـهُـمْ أَخُوهُـمْ هُودٌأَ لَا تَتَّقُونَ .١٢٤

  • When their brother, Hued [alai'his'slaam], said to them "Would you people not protect yourselves? [26:124]

جب ان کے بھائی  ھود(علیہ السلام)نے ان کے لئے ہدایت دیتے ہوئے کہا"کیا تم لوگ حقیقت کو جان لینے کے باوجود اپنے آپ کوخوفناک نتائج و عواقب سےمحفوظ کرنے کے لئے پناہ کے خواستگار نہیں بنو گے؟

إِنِّـى لَـكُـمْ رَسُولٌ أَمِيـنٚ .١٢٥

  • Indeed I am for you people the trusted Messenger. [26:125]

یقینامیں مجھے سونپی گئی ذمہ داریوں کو کماحقہ سرانجام دینے والا رسول ہوں جسے خاص طور پر تم لوگوں کو راہ ہدایت کی جانب آنے کی دعوت اور متنبہ کرنے کے لئے بھیجا گیا ہے۔

فَٱتَّقُوا۟ ٱللَّهَ

  • Therefore, you people sincerely endeavour to attain the protection from Allah the Exalted

اس لئے تم لوگ تندہی سے محتاط رہتے ہوئے اللہ تعالیٰ سے پناہ کے خواستگار رہو۔

وَأَطِيعُونِ .١٢٦

  • And listen and accept my word. [26:126]

اور میرے کہے کو تم لوگ تسلیم کرو۔

وَمَآ أَسْـٔ​َلُـكُـمْ عَلَيْـهِ مِنْ أَجْرٍۖٛۖ

  • And I do not ask you people; for that discharging the entrusted trust, any worldly remuneration

اوراس پر غور کرو میں اس (کتاب اللہ)کے اشاعت، تبلیغ اور تعلیم دینے کے لئے تم سے مال دینے کا سوال نہیں کرتا۔

إِنْ أَجْرِىَ إِلَّا عَلَـىٰ رَبِّ ٱلْعَٟلَمِيـنَ .١٢٧

  • My reward is due on none except upon the Sustainer Lord of Worlds [Whose Trust/Assignment is being discharged]. [26:127]

اس لئے کہ میرا ان خدمات کا اجر صرف اور صرف   تمام جہانوں کے پروردگار اور فرمانروا پر واجب الادا ہے۔

أَتَبْنُونَ بِكُلِّ رِيعٍٛ ءَايَةٙ تَعْبَثُونَ .١٢٨

  • Do you people construct at every elevated point a monument; you people act superfluously. [26:128]

کیا تم لوگ ہر بات کے موقع محل کے لئے ہر اونچے مقام پر ایک یادگار تعمیر کر دیتے ہو؟کیا ہی بیکار اور لامقصد کام تم لوگ کرتے ہو۔

Root: ع ب ث

وَتَتَّخِذُونَ مَصَانِعَ لَعَلَّـكُـمْ تَخْلُدُونَ .١٢٩

  • And you people adopt for yourselves strongholds hoping that you might live for long. [26:129]

اور تم لوگ کاریگری سے تعمیر کردہ محلات کو زیر مقصد مضبوط گڑھ کے طور اختیار کرتے ہو،اس امکان کے پیش نظر کہ تم دوام حاصل کر سکو۔

Root: ص ن ع

وَإِذَا بَطَشْتُـم بَطَشْتُـمْ جَبَّارِينَ .١٣٠

  • And when you seize people, you seize tyrannically. [26:130]

اور جب تم نے کسی کو گرفت میں لیا تو گرفت میں لینے کا انداز جابرانہ اور وحشیانہ تھا۔

فَٱتَّقُوا۟ ٱللَّهَ

  • Therefore, you people sincerely endeavour to attain the protection from Allah the Exalted

چونکہ ماضی کا طرز عمل  قابل قدر نہیں تھااس لئے اب تم لوگ تندہی سے محتاط رہتے ہوئے اللہ تعالیٰ سے پناہ کے خواستگار رہو۔

وَأَطِيعُونِ .١٣١

  • And listen and accept my word. [26:131]

اور میرے کہے کو تم لوگ تسلیم کرو۔

وَٱتَّقُوا۟  ٱلَّذِىٓ أَمَدَّكُم بِمَا تَعْلَمُونَ .١٣٢

  • And you people sincerely endeavour to attain the protection from Him the Exalted Who has stretched/aided you in whatever you people know. [26:132]

اور ان جناب سے اپنے طرز عمل میں محتاط رہتے ہوئے پناہ کے خواستگار بنو جنہوں نے تمہیں ان علوم میں وسیع دسترس دی ہے جو تم جانتے ہو۔

أَمَدَّكُم بِأَنْعَٟمٛ وَبَنِيـنَ .١٣٣

  • He the Exalted has made you people affluent with mammals and sons [26:133]

ان جناب نے تم لوگوں کو پالتو چوپایوں اور بیٹوں کے افرادی پھیلاؤ سے نوازا ہے۔

وَجَنَّٟتٛ وَعُيُونٍ.١٣٤

  • And with gardens and springs. [26:134]

اور باغات اور پانی کے چشموں کی وافر دستیابی سے نوازا ہے۔

إِنِّـىٓ أَخَافُ عَلَيْكُـمْ عَذَابَ يَوْمٍ عَظِيـمٛ .١٣٥

  • I am apprehensive of the punishment of the great day that might befall upon you people."  [26:135]

یہ حقیقت ہے کہ میں سراسیمہ اور فکرمند ہوں تم لوگوں پر ایک بڑے دن میں عذاب مسلط ہونے کے متعلق"۔

قَالُوا۟ سَوَآءٌ عَلَيْنَآ أَوَعَظْتَ أَمْ لَمْ تَكُن مِّنَ ٱلْوَٟعِظِيـنَ .١٣٦

  • They (the ruling elite) replied, "It is one and the same thing for us whether you have advised us or had not acted as an admonishers [26:136]

ان عمائدین نے جواب دیا"چاہے آپ نے ہمیں  درس ِنصیحت دے دیا یا چاہے آپ پندگو نہ بنیں ہم پریکساں معنی کا حامل ہے۔

Root: و ع ظ

إِنْ هَـٰذَا إِلَّا خُلُقُ ٱلۡأَوَّلِيـنَ .١٣٧

  • As for those monuments are concerned, we have not constructed; it are not but the creations of the earlier generation. [26:137]

جہاں تک ان یادگاروں کا تعلق ہے  تو یہ اولین نسل کے لوگوں کی تخلیق کردہ ہیں۔

وَمَا نَـحْنُ بِمُعَذَّبِيـنَ .١٣٨

  • And we are certainly not to be victims of punishment for works of earlier people. [26:138]

اور ہم لوگ قطعی طور پر عذاب دئیے جانے والوں میں شمار نہیں ہوں"۔

فَكَذَّبُوهُ فَأَهْلَـكْنَٟهُـمْۗ

  • Thereby they contradicted him [Hued alai'his'slaam] and consequently Our Majesty annihilated them.

چونکہ ان کی باتوں کو وہ اپنے معاشی اور سیاسی غلبہ و اقتدار کے لئے خطرہ سمجھتے تھے اس لئے انہوں نے انہیں برملا جھٹلا دیا۔اس لئے اتمام حجت اور مہلت کا وقت ختم ہونے پر ہم جناب نے انہیں نیست و نابود کر دیا۔

إِنَّ فِـى ذَٟلِكَ لَءَايَةٙۖ

  • Indeed there is a point for pondering in this disclosure

یقینا ً ایک سبق   اور انتباہ جو جگ بیتی سے درس لینے پر سننے والوں کو مائل کر سکتا ہے ایک قوم کی تاریخ کے اس بیان میں موجود اور مقصد ہے۔۔

وَمَا كَانَ أَكْثَرُهُـم مُّؤْمِنِيـنَ .١٣٩

  • But most of them have not been the believers. [26:139]

یاد رہے؛ان بیتے لوگوں کی اکثریت رسول اللہ کو ماننے والے نہیں تھے۔

وَإِنَّ رَبَّكَ لَـهُوَ ٱلْعَزِيزُ ٱلرَّحِـيـمُ .١٤٠

  • However, fact remains, the Sustainer Lord of you the Messenger is certainly He Who is Absolutely Dominant, the Fountain of Infinite Mercy. [26:140]

اور لوگ آپ (ﷺ) کے رب کے متعلق حقیقت جان لیں ،وہ جناب دائمی، ہر لمحہ، ہر مقام پر مطلق غالب فرمانروا ہیں، منبع رحمت ہیں۔


كَذَّبَتْ ثَمُودُ ٱلْمُـرْسَلِيـنَ .١٤١

  • The people of Samued publicly contradicted those who were sent as Messengers [26:141]

تاریخ جان لو؛  قوم ثنود نے ان کی جانب بھیجے گئے رسولوں کوبرسر عام جھٹلایا تھا۔

إِذْ قَالَ لَـهُـمْ أَخُوهُـمْ صَٟلِحٌ أَ لَا تَتَّقُونَ .١٤٢

  • When their brother, Saleh [alai'his'slaam], said to them "Would you people not protect yourselves? [26:142]

جب ان کے بھائی  صالح(علیہ السلام)نے ان کے لئے ہدایت دیتے ہوئے کہا"کیا تم لوگ حقیقت کو جان لینے کے باوجود اپنے آپ کوخوفناک نتائج و عواقب سےمحفوظ کرنے کے لئے پناہ کے خواستگار نہیں بنو گے؟

إِنِّـى لَـكُـمْ رَسُولٌ أَمِيـنٚ .١٤٣

  • Indeed I am for you people the trusted Messenger [26:143]

یقینامیں مجھے سونپی گئی ذمہ داریوں کو کماحقہ سرانجام دینے والا رسول ہوں جسے خاص طور پر تم لوگوں کو راہ ہدایت کی جانب آنے کی دعوت اور متنبہ کرنے کے لئے بھیجا گیا ہے۔

فَٱتَّقُوا۟ ٱللَّهَ

  • Therefore, you people sincerely endeavour to attain the protection from Allah the Exalted

اس لئے تم لوگ تندہی سے محتاط رہتے ہوئے اللہ تعالیٰ سے پناہ کے خواستگار رہو۔

وَأَطِيعُونِ .١٤٤

  • And listen and accept my word. [26:144]

اور میرے کہے کو تم لوگ تسلیم کرو۔

وَمَآ أَسْـٔ​َلُـكُـمْ عَلَيْهِ مِنْ أَجْرٍۖٛۖ

  • And I do not ask you people; for that discharging the entrusted trust, any worldly remuneration

اوراس پر غور کرو میں اس (کتاب اللہ)کے اشاعت، تبلیغ اور تعلیم دینے کے لئے تم سے مال دینے کا سوال نہیں کرتا۔

إِنْ أَجْرِىَ إِلَّا عَلَـىٰ رَبِّ ٱلْعَٟلَمِيـنَ .١٤٥

  • My reward is due on none except upon the Sustainer Lord of Worlds [Whose Trust/Assignment is being discharged]. [26:145]

اس لئے کہ میرا ان خدمات کا اجر صرف اور صرف   تمام جہانوں کے پروردگار اور فرمانروا پر واجب الادا ہے۔

أَتُتْـرَكُونَ فِـى مَا هَٟهُنَآ ءَامِنِيـنَ .١٤٦

  • Will you people be left in what is here as secure people [26:146]

کیا تم لوگ یہ سمجھتے ہو کہ تمہیں ان خوشگوار حالات جن میں تم مگن ہو امن و امان سے رہنے دیا جائے گا۔

فِـى جَنَّٟتٛ وَعُيُونٛ .١٤٧

  • In the gardens and springs [26:147]

باغات اور پانی کے چشموں کی وافر دستیابی  میں ۔

وَزُرُوعٛ وَنَخْلٛ طَلْعُهَا هَضِيـمٚ .١٤٨

  • And cultivated crop-fields and trees of date-palms. Her Spathe is digestive. [26:148]

اور کاشت کی ہوئی فصلوں اور کھجور کے درختوں کی وافر مقدار میں۔ان کی خاص بات یہ ہے کہ ان کے خوشے ہاضم کا کردار ادا کرتے ہیں۔

Root: ز ر ع; ھ ض م ط ل ع; ن خ ل

وَتَنْحِتُونَ مِنَ ٱلْجِبَالِ بُيُوتٙا فَٟرِهِيـنَ .١٤٩

  • And you people carve out the mountains for houses skilfully - artistically. [26:149]

اور تم لوگ نہایت ہنر مندی سے پہاڑوں  میں سے جگہ کاٹ کر گھر بناتے ہو۔

Root: ن ح ت

فَٱتَّقُوا۟ ٱللَّهَ

  • Therefore, you people sincerely endeavour to attain the protection from Allah the Exalted

چونکہ ماضی کا طرز عمل  قابل قدر نہیں تھااس لئے اب تم لوگ تندہی سے محتاط رہتے ہوئے اللہ تعالیٰ سے پناہ کے خواستگار رہو۔

وَأَطِيعُونِ .١٥٠

  • And listen and accept my word. [26:150]

اور میرے کہے کو تم لوگ تسلیم کرو۔

وَلَا تُطِيعُوٓا۟ أَمْرَ ٱلْمُسْـرِفِيـنَ .١٥١

  • And you people should not accept the word of the transgressors [26:151]

اور تم لوگوں کو منع کیا جاتا ہے کہ اسراف اور انجام سے بے پرواہ طرز عمل پر کاربند لوگوں کے حکم کو تسلیم کرو۔

Root: س ر ف

ٱلَّذِينَ يُفْسِدُونَ فِـى ٱلۡأَرْضِ وَلَا يُصْلِحُونَ .١٥٢

  • They are the ones who create distortions and imbalances in the society - Earth and they do not reform". [26:152]

یہ وہ لوگ ہیں جو معاشرے میں ذہنی و فکری انتشارسے بگاڑ پھیلاتے ہیں اورمعاشرے کو اصلاح کی جانب راغب کرنے پر تیار نہیں"۔

قَالُوٓا۟ إِنَّمَآ أَنتَ مِنَ ٱلْمُسَحَّرِينَ .١٥٣

  • They replied, "You are only of those who are rendered obsessed - effected by illusions. [26:153]

انہوں (عمائدین/اکابرین قوم)نے کہا’’آپ تو محض سحر زدہ ہیں۔

Root: س ح ر

مَآ أَنتَ إِلَّا بَشَـرٚ مِّثْلُنَا

  • You are none but a human like us

تم  ہم جیسے بشر ہونے کے علاوہ کسی خصوصیت کے حامل نہیں ہو۔

فَأْتِ بِـَٔايَةٍٛ

  • Thereat, if you are truly the Messenger then come to us you bring an unprecedented display - miraculous sign

    اگر  تم واقعی رسول ہو تو جاؤ   ایسی شہادت(آیت/معجزہ)کے ساتھ آؤ جوتصور،تجربہ،سائنسی توجیہ  سےماورائے اِدراک  ہوتے ہوئے   سند اور برھان کی حیثیت رکھتی ہو ۔

إِن كُنتَ مِنَ ٱلصَّٟدِقِيـنَ .١٥٤

  • If you were the truthful in your statement of being the Messenger". [26:154]

اگر آپ سچ بولنے والے ہیں"۔

قَالَ هَـٰذِهِۦ نَاقَةٚ

  • He (Saleh [alai'his'slaam]) said, "This is the she-camel [for you people she is a sign/emblem from Allah]

انہوں (صالح علیہ السلام) نے کہادیکھو یہ ہے اللہ تعالیٰ کی جانب سے بھیجی ہوئی اونٹنی۔یہ تمہارے لئے مافوق الفطرت مشاہدے کا کردار ادا کرے گی۔

لَّـهَا شِرْبٚ وَلَـكُـمْ شِرْبُ يَوْمٛ مَّعْلُومٛ .١٥٥

  • For her is the term of drink and for you people is the term of drink on designated day [26:155]

پانی پینے کے لئے معلوم دن کو اس کی باری مقرر کی گئی ہے اور تم لوگوں کے پینے کے لئے پانی حاصل کرنے کی باری کا متعین دن ہے۔

وَلَا تَمَسُّوهَا بِسُوٓءٛ فَيَأْخُذَكُمْ عَذَابُ يَوْمٍ عَظِيـمٛ .١٥٦

  • And you people should not touch her with harming intention for which reason you people may be seized by a torment of great day. [26:156]

اور تم لوگوں کو چاہئے کہ اسے برائی /تکلیف پہنچانےکی نیت سے مت چھونا۔اگر تم نے ایسا کیا تو سب سے بڑے دن  عذاب تم لوگوں کو پکڑ لے گا"۔

فَعَقَرُوهَا فَأَصْبَحُوا۟ نَـٟدِمِيـنَ .١٥٧

  • Thenfor reason extreme defiance, they hamstrung her, thereafter/for reason of having met severe torment they became regretful. [26:157]

جواب سےاٖحساس تلملاہٹ پر  چونکہ خوف و ہراس پیدا کر کے اپنے دبدبہ کو برقرار رکجنا چاہتے تھے اس لئے انہوں نے  تلوار سے   اس اونٹنی کےپاؤں کاٹ کر معذور بنا دیا۔حماقت کا احساس ہونے پر عذاب کی تنبیہ سے پشیمان ہو گئے۔

فَأَخَذَهُـمُ ٱلْعَذَابُۗ

  • [but having seen the infliction regret is of no avail in accordance with laid down principle] Thereby the affliction seized them.

چونکہ اس قسم کی حرکت کا انجام انہیں بتا دیا گیا تھا اس لئے حسب وعدہ منفرد عذاب نے انہیں گرفت میں لے لیا۔

إِنَّ فِـى ذَٟلِكَ لَءَايَةٙۖ

  • Indeed there is a point for pondering in this disclosure

یقینا ً ایک سبق   اور انتباہ جو جگ بیتی سے درس لینے پر سننے والوں کو مائل کر سکتا ہے ایک قوم کی تاریخ کے اس بیان میں موجود اور مقصد ہے۔۔

وَمَا كَانَ أَكْثَرُهُـم مُّؤْمِنِيـنَ .١٥٨

  •  But most of them have not been the believers. [26:158]

یاد رہے؛ان بیتے لوگوں کی اکثریت رسول اللہ کو ماننے والے نہیں تھے۔

وَإِنَّ رَبَّكَ لَـهُوَ ٱلْعَزِيزُ ٱلرَّحِـيـمُ .١٥٩

  • However, fact remains, the Sustainer Lord of you the Messenger is certainly He Who is Absolutely Dominant, the Fountain of Infinite Mercy. [26:159]

اور لوگ آپ (ﷺ) کے رب کے متعلق حقیقت جان لیں ،وہ جناب دائمی، ہر لمحہ، ہر مقام پر مطلق غالب فرمانروا ہیں، منبع رحمت ہیں۔


كَذَّبَتْ قَوْمُ لُوطٍٛ ٱلْمُـرْسَلِيـنَ .١٦٠

  • The nation of Luet [alai'his'slaam] publicly contradicted those who were sent as Messengers  [26:160]

تاریخ جان لو؛ لوط(علیہ السلام)کی قوم نے ان کی جانب بھیجے گئے رسولوں کوبرسر عام جھٹلایا تھا۔

إِذْ قَالَ لَـهُـمْ أَخُوهُـمْ لُوطٌ أَ لَا تَتَّقُونَ .١٦١

  • When their brother, Luet [alai'his'slaam], said to them "Would you people not protect yourselves? [26:161]

جب ان کے بھائی  لوط(علیہ السلام)نے ان کے لئے ہدایت دیتے ہوئے کہا"کیا تم لوگ حقیقت کو جان لینے کے باوجود اپنے آپ کوخوفناک نتائج و عواقب سےمحفوظ کرنے کے لئے پناہ کے خواستگار نہیں بنو گے؟

إِنِّـى لَـكُـمْ رَسُولٌ أَمِيـنٚ .١٦٢

  • Indeed I am for you people the trusted Messenger [26:162]

یقینامیں مجھے سونپی گئی ذمہ داریوں کو کماحقہ سرانجام دینے والا رسول ہوں جسے خاص طور پر تم لوگوں کو راہ ہدایت کی جانب آنے کی دعوت اور متنبہ کرنے کے لئے بھیجا گیا ہے۔

فَٱتَّقُوا۟ ٱللَّهَ

  • Therefore, you people sincerely endeavour to attain the protection from Allah the Exalted

اس لئے تم لوگ تندہی سے محتاط رہتے ہوئے اللہ تعالیٰ سے پناہ کے خواستگار رہو۔

وَأَطِيعُونِ .١٦٣

  • And listen and accept my word. [26:163]

اور میرے کہے کو تم لوگ تسلیم کرو۔

وَمَآ أَسْـٔ​َلُـكُـمْ عَلَيْهِ مِنْ أَجْرٍۖٛۖ

  • And I do not ask you people; for thatdischarging the entrusted trust, any worldly remuneration

اور اس پر غور کرو میں اس (کتاب اللہ)کے اشاعت، تبلیغ اور تعلیم دینے کے لئے تم سے مال دینے کا سوال نہیں کرتا۔

إِنْ أَجْرِىَ إِلَّا عَلَـىٰ رَبِّ ٱلْعَٟلَمِيـنَ .١٦٤

  • My reward is due on none except upon the Sustainer Lord of Worlds [Whose Trust/Assignment is being discharged]. [26:164]

اس لئے کہ میرا ان خدمات کا اجر صرف اور صرف   تمام جہانوں کے پروردگار اور فرمانروا پر واجب الادا ہے۔

أَتَأْتُونَ ٱلذُّكْرَانَ مِنَ ٱلْعَٟلَمِيـنَ .١٦٥

  • "Do you people come to males [heterosexuality] in the whole of people/human history [26:165]

کیا یہ سچ نہیں کہ تم لوگ مخصوص نر جنس والوں کے پاس  آتے ہو جو دنیا میں ہم جنس پرستی کرتے ہیں۔

وَتَذَرُونَ مَا خَلَقَ لَـكُـمْ رَبُّكُـم مِّنْ أَزْوَٟجِكُـمۚ

  • And you people leave what your Sustainer Lord has created for you respectively as your mates

اور تم لوگ اسے ترک کرتے رہتے ہو جو تمہارے رب نے تمہاری بیویوں میں تمہارے جنسی اختلاط کے لئے تخلیق کیا ہے ( جملے میں حال محذوف ہے جو واضح ہےفرج)۔

Root: و ذ ر

بَلْ أَنتُـمْ قَوْمٌ عَادُونَ .١٦٦

  • The fact is that you are a transgressing people." [26:166]

جو بھی جواز بناتے ہو وہ غلط ہے،در حقیقت تم  سرشار ہوکرحد سے باہر ہو جانے والے لوگ ہو۔

قَالُوا۟ لَئِن لَّمْ تَنتَهِ يَٟلُوطُ لَتَكُونَنَّ مِنَ ٱلْمُخْرَجِيـنَ .١٦٧

  • They (the ruling elite) threatened him, "Indeed if you did not desist, O Luet, certainly you will definitely be amongst those who are ousted [from the city]" [26:167]

انہوں(عمائدین)نے کہا’’یہ تاکید ہے اگر تو اپنے آپ باز نہیں کیا اے لوط تو یقیناً تو شہربدر کئے لوگوں میں ہو جائے گا‘‘۔

قَالَ إِنِّـى لِعَمَلِـكُـم مِّنَ ٱلْقَالِيـنَ .١٦٨

  • He (Luet alai'his'slaam) said, "Indeed I am one of those who abhor the act of you people." [26:168]

انہوں(لوط علیہ السلام)نے جواب دیا’’یہ حقیقت ہے کہ میں ان میں سے ہوں جو  شہر میں متنفر اور بیزار ہیں تم لوگوں کے  اس کھلے عام  معمول کےعمل کی وجہ سے‘‘۔

Root: ق ل و

رَبِّ نَّجِنِى وَأَهْلِـى مِمَّا يَعْمَلُونَ .١٦٩

  • Luet [alai'his'slaam] prayed, "My Sustainer Lord! Do rescue me and my family/household from that which they people are doing." [26:169]

انہوں(لوط علیہ السلام)نے فریاد کی’’میرے رب، مجھے اور میرے اہل خانہ کو نجات دلائیں فوری اس سے جو ان لوگوں نے شہر میں معمول بنایا ہوا ہے‘‘۔

فَنَجَّيْنَٟهُ وَأَهْلَهُۥٓ أَجْـمَعِيـنَ .١٧٠

  • In response Our Majesty saved - escaped him [Lut alai'his'slaam] and his household; all collectively [26:170]

ان کی فریاد پر ہم جناب نے انہیں اور ان کے اہل خانہ کو نجات دلا دی،اجتماعی طور پر۔

إِلَّا عَجُوزٙا فِـى ٱلْغَٟبِـرِينَ .١٧١

  • Except an old woman [his wife], she was amongst those who stayed behind.  [26:171]

سوائے ان کی بیوی کے۔ہم جناب نے اسے سزا پانے والوں میں شمار کر دیا تھا کیونکہ وہ اس وقت بھی  ایمان لانے سے گریزاں حال میں تھی۔

Root: ع ج ز;  غ ب ر

ثُـمَّ دَمَّرْنَا ٱلۡءَاخَرِينَ .١٧٢

  • Afterwards [migration before time and rescuing them in discharge of Our promise-10:103] Our Majesty destroyed the others. [26:172]

بعد ازاں ہم جناب نے شہر کے دوسرے باسیوں کو کچل دیا۔

Root: د م ر

وَأَمْطَرْنَا عَلَيْـهِـم مَّطَرٙاۖ

  • And Our Majesty had showered upon them in the manner of sprayingsplinters

اور ہم  جناب نے ان پر برسایا عذاب، چھڑکاؤ کے انداز اور اثرانگیزی سے۔

Root: م ط ر

فَسَآءَ مَطَرُ ٱلْمُنذَرِينَ .١٧٣

  • Thereat worst was the shower for those who were duly admonished. [26:173]

چونکہ وہ برسات گرم لاوہ اور نوکدار شیشہ نما پتھروں سے تھا اس لئے وہ کیا ہی برا برسات تھا ان کا جنہیں بار بار متنبہ کیا گیا تھا۔

Root: م ط ر

إِنَّ فِـى ذَٟلِكَ لَءَايَةٙۖ

  • Indeed there is a point for pondering in this disclosure

یقینا ً ایک سبق   اور انتباہ جو جگ بیتی سے درس لینے پر سننے والوں کو مائل کر سکتا ہے ایک قوم کی تاریخ کے اس بیان میں موجود اور مقصد ہے۔

وَمَا كَانَ أَكْثَرُهُـم مُّؤْمِنِيـنَ .١٧٤

  • But most of  them have not been the believers. [26:174]

یاد رہے؛ان بیتے لوگوں کی اکثریت رسول اللہ کو ماننے والے نہیں تھے۔

وَإِنَّ رَبَّكَ لَـهُوَ ٱلْعَزِيزُ ٱلرَّحِـيـمُ .١٧٥

  • However, fact remains, the Sustainer Lord of you the Messenger is certainly He Who is Absolutely Dominant, the Fountain of Infinite Mercy. [26:175]

اور لوگ آپ (ﷺ) کے رب کے متعلق حقیقت جان لیں ،وہ جناب دائمی، ہر لمحہ، ہر مقام پر مطلق غالب فرمانروا ہیں، منبع رحمت ہیں۔


كَذَّبَ أَصْحَـٟـبُ لْـَٔيْكَةِ ٱلْمُـرْسَلِيـنَ .١٧٦

  • The residents of "Aikate" - afforested land - Nation Madyan - people of Shoaib [alai'his'slaam] publicly contradicted those who were sent as Messengers [26:176]

یاد رہے ؛(شیعب علیہ السلام کی قوم مدین کا مسکن)ٱلۡأَيْكَةِ میں بسنے والے  لوگوں  نے ان کی جانب مبعوث فرمائے رسولوں کے بیان کو برملا جھٹلایا تھا۔

إِذْ قَالَ لَـهُـمْ شُعَيْبٌ أَلَا تَتَّقُونَ .١٧٧

  • When Shoaib [alai'his'slaam] said to them "Would you people not protect yourselves? [26:177]

جب شعیب(علیہ السلام)نے ان کے لئے ہدایت دیتے ہوئے کہا"کیا تم لوگ حقیقت کو جان لینے کے باوجود اپنے آپ کوخوفناک نتائج و عواقب سےمحفوظ کرنے کے لئے پناہ کے خواستگار نہیں بنو گے؟

إِنِّـى لَـكُـمْ رَسُولٌ أَمِيـنٚ .١٧٨

  • Indeed I am for you people the trusted Messenger [26:178]

یقینامیں مجھے سونپی گئی ذمہ داریوں کو کماحقہ سرانجام دینے والا رسول ہوں جسے خاص طور پر تم لوگوں کو راہ ہدایت کی جانب آنے کی دعوت اور متنبہ کرنے کے لئے بھیجا گیا ہے۔

فَٱتَّقُوا۟ ٱللَّهَ

  • Therefore, you people sincerely endeavour to attain the protection from Allah the Exalted

اس لئے تم لوگ تندہی سے محتاط رہتے ہوئے اللہ تعالیٰ سے پناہ کے خواستگار رہو۔

وَأَطِيعُونِ .١٧٩

  • And listen and accept my word. [26:179]

اور میرے کہے کو تم لوگ تسلیم کرو۔

وَمَآ أَسْـٔ​َلُـكُـمْ عَلَيْـهِ مِنْ أَجْرٍۖٛۖ

  • And I do not ask you people; for thatdischarging the entrusted trust, any worldly remuneration

اور اس پر غور کرو میں اس (کتاب اللہ)کے اشاعت، تبلیغ اور تعلیم دینے کے لئے تم سے مال دینے کا سوال نہیں کرتا۔

إِنْ أَجْرِىَ إِلَّا عَلَـىٰ رَبِّ ٱلْعَٟلَمِيـنَ .١٨٠

  • My reward is due on none except upon the Sustainer Lord of Worlds [Whose Trust/Assignment is being discharged]. [26:180]

اس لئے کہ میرا ان خدمات کا اجر صرف اور صرف   تمام جہانوں کے پروردگار اور فرمانروا پر واجب الادا ہے۔

أَوْفُوا۟ ٱلْـكَـيْلَ وَلَا تَكُونُوا۟ مِنَ ٱلْمُخْسِـرِينَ .١٨١

  • You people are directed to give away - discharge the liability of measure and weighing in full and do not be those who cause loss to others [26:181]

اور تم لوگوں کو حکم دیا جاتا ہے کہ پیمائش کو مکمل کر کے دو جب تم پیمانے کے معیار پر کاروبار کر رہے ہو؛اور ان لوگوں کی طرح نہ بنو جو دوسروں کو خسارہ دیتے ہیں۔

Root: ك ى ل

وَزِنُوا۟ بِٱلْقِسْطَاسِ ٱلْمُسْتَقِيـمِ .١٨٢

  • And you people weigh equitablyon exacting balance/equilibrium scale [26:182]

اور بالکل متوازن ترازو سے وزن کر کے دو۔

Root: ق س ط س; و ز ن

وَلَا تَبْخَسُوا۟ ٱلنَّاسَ أَشْيَآءَهُـمْ

  • And you should not deprive people of their goods by lessening [in quantity, measure and weight]

اور تمہیں چاہئے کہ لوگوں کو خسارا نہ دو ان کی اشیاء کی پیمائش،وزن،مقدار میں کمی کر کے۔

Root: ب خ س

وَلَا تَعْثَوْا۟ فِـى ٱلۡأَرْضِ مُفْسِدِينَ .١٨٣

  • And neither you should, like mischief-doers, create intellectual distortions-conjectural myths-disquiet in the society. [26:183]

 اور تمہیں چاہئے کہ زمین /معاشرےمیں بگاڑ پیدا کرنے والوں کے انداز میں ذہنی و فکری انتشارنہ پھیلاؤ“۔

وَٱتَّقُوا۟ ٱلَّذِى خَلَقَكُـمْ وَٱلْجِبِلَّةَ ٱلۡأَوَّلِيـنَ .١٨٤

  • And you people sincerely endeavour to attain the protection from Him the Exalted Who created you people and the earlier multitudes. [26:184]

اورتم لوگ تندہی سے محتاط رہتے ہوئے ان جناب سے پناہ کے خواستگار رہو جنہوں نے تمہیں تخلیق کیا ہے اور ان کو جو کشیر تعداد میں پہلے گزر چکے ہیں"۔

قَالُوٓا۟ إِنَّمَآ أَنتَ مِنَ ٱلْمُسَحَّرِينَ .١٨٥

  • They replied, "You are only of those who are rendered obsessed - effected by illusions [26:185]

انہوں (عمائدین/اکابرین قوم)نے کہا’’آپ تو محض سحر زدہ ہیں۔

Root: س ح ر

وَمَآ أَنتَ إِلَّا بَشَـرٚ مِّثْلُنَا

  • You are none but a human like us

اورتم  ہم جیسے بشر ہونے کے علاوہ کسی خصوصیت کے حامل نہیں ہو۔

وَإِن نَّظُنُّكَ لَمِنَ ٱلْـكَـٟذِبِيـنَ .١٨٦

  • And indeed we assess you that you are certainly one of the liars - falsifiers [26:186]

اور حقیقت ہے کہ ہم آپ کے متعلق یہ گمان  کر رہے ہیں کہ جھوٹ بولنے والے بن گئے ہیں۔

فَأَسْقِطْ عَلَيْنَا كِسَفٙا مِّنَ ٱلسَّمَآءِ

  • Therefore you cause to befall upon us pieces from the Sky(read with 11:89)

چونکہ آپ عذاب کی دھمکی دے رہے ہیں اس لئے آپ  آسمان سےہم پر پتھروں کے ٹکڑے برسا دیں۔

Root:  س ق ط; ك س ف

إِن كُنتَ مِنَ ٱلصَّٟدِقِيـنَ .١٨٧

  • Do it if you were the truthful in your statement." [26:187]

ایسا کر کے دکھائیں اگر آپ سچ بولنے والے ہیں"۔

قَالَ رَبِّـىٓ أَعْلَمُ بِمَا تَعْمَلُونَ .١٨٨

  • He (Shoaib alai'his'slaam) said, "My Sustainer Lord fully knows what you people are doing". [26:188]

انہوں(شعیب علیہ السلام)نے کہا"میرے رب بخوبی جانتے ہیں جن اعمال پر تم لوگ کاربند ہو"۔

فَكَذَّبُوهُ فَأَخَذَهُـمْ عَذَابُ يَوْمِ ٱلظُّلَّةِۚ

  • Thereby, they publicly contradicted him, resultantly the affliction of a shady day seized them

چونکہ ان کی باتوں کو وہ اپنے معاشی اور سیاسی غلبہ و اقتدار کے لئے خطرہ سمجھتے تھے اس لئے انہوں نے انہیں برملا جھٹلا دیا۔چنانچہ اتمام حجت اور مہلت کا وقت ختم ہونے پرابر آلود دن کے عذاب نے انہیں گرفت میں لے لیا۔

Root: ظ ل ل

إِنَّهُۥ كَانَ عَذَابَ يَوْمٍ عَظِيـمٛ .١٨٩

  • Indeed that was a prevailing torment of great day. [26:189]

حقیقت یہ ہے کہ وہی بڑے دن کا عذاب تھا جس کی انہیں وعید (ھودؐ۔84)دی گئی تھی۔

إِنَّ فِـى ذَٟلِكَ لَءَايَةٙۖ

  • Indeed there is a point for pondering in this disclosure

یقینا ً ایک سبق   اور انتباہ جو جگ بیتی سے درس لینے پر سننے والوں کو مائل کر سکتا ہے ایک قوم کی تاریخ کے اس بیان میں موجود اور مقصد ہے۔

وَمَا كَانَ أَكْثَرُهُـم مُّؤْمِنِيـنَ .١٩٠

  • But most of them have not been the believers. [26:190]

یاد رہے؛ان بیتے لوگوں کی اکثریت رسول اللہ کو ماننے والے نہیں تھے۔

وَإِنَّ رَبَّكَ لَـهُوَ ٱلْعَزِيزُ ٱلرَّحِـيـمُ .١٩١

  • However, fact remains, the Sustainer Lord of you the Messenger is certainly He Who is Absolutely Dominant, the Fountain of Infinite Mercy. [26:191]

اور لوگ آپ (ﷺ)کے رب کے متعلق حقیقت جان لیں ،وہ جناب دائمی، ہر لمحہ، ہر مقام پر مطلق غالب فرمانروا ہیں، منبع رحمت ہیں۔


وَإِنَّهُۥ لَتَنزِيلُ رَبِّ ٱلْعَٟلَمِيـنَ .١٩٢

  • And truly it (Qur’ān) is certainly the piecemeal dispatch of the Sustainer Lord of the Worlds [26:192]

جان لیں؛یہ حقیقت ہے کہ وہ (قرءان مجید)یقیناً تمام موجودات کے رب کی جانب سے  موقع محل کی مناسبت سے بتدریج/سلسلہ وار انداز میں لوگوں کو پہنچانے کے لئے بھیجا  جا رہا ہے:

نَزَلَ بِهِ ٱلرُّوحُ ٱلۡأَمِيـنُ .١٩٣

  • -- The trusted executor of vital-command: Gib'raa'eil [alai'his'slaam] did descend once along with it (Qur’ān) -- [26:193]

۔۔(یہ الگ حقیقت ہے)الروح الامین(جبرائیل علیہ السلام )ایک بار آسمان سے اتر کر نیچے آئے تھے اس (قرء ان مجید)کے مسودہ کے ساتھ۔۔

Root: ر و ح

عَلَـىٰ قَلْبِكَ لِتَكُونَ مِنَ ٱلْمُنذِرِينَ .١٩٤

  • The purpose of reciting and conveying the Qur’ān in this serial manner is to imprint it upon your heart so that there remains no possibility of forgetting (see 2:97 and 87:6). The purpose is that you the Messenger gradually become and are recognized as the last universal member of the galaxy of Revivalists, Warner, Awakeners

اس  سلسلہ وار انداز میں   قرءان کو آپ کو سنانے اور پہنچانے کا مقصد یہ ہے کہ آپ(ﷺ)کے قلب پر نقش  ہو جائے کہ بھولنے کا امکان  ہی نہ رہے(البقرۃ۔97؛اورالاعلیٰ۔6)۔اس کا مقصد یہ ہے کہ آپ(ﷺ)باطل طرز عمل پر گامزن لوگوں کو لازمی تکلیف دہ عواقب سے متنبہ  کرنے والوں کے جھرمٹ  میں  آخری اورعالمی  بیدار کرنے والے بن جائیں۔

بِلِسَانٍٛ عَـرَبِـىّٛ مُّبِيـنٛ .١٩٥

  • The universal Revivalist/Awakener - admonishing people in Arabic, language of Arabian Peninsula, which is characteristically rich, clear, perspicuous, eloquent, conveyor of information in succinct, individuated, and crystallized manner. (alternatively; It (Qur’ān) is transcribed in the language Arabic......)  [26:195]

تمام عالم کو  جزیرہ عرب کے لوگوں کی   فصیح و بلیغ زبان میں بیدار کرنے والے/ اس(قرءان مجید)کو جزیرہ عرب کے لوگوں کی فصیح و بلیغ زبان میں مدون کر کے بھیجا گیا ہے۔

Root: ع ر ب; ل س ن

وَإِنَّهُۥ لَفِى زُبُرِ ٱلۡأَوَّلِيـنَ .١٩٦

  • And indeed this fact was certainly mentioned in the written papers of earlier periods. [26:196]

اور یہ حقیقت بھی جان لو کہ یہ(عرب کی زبان میں نزول کتاب)پچھلے زمانے کے مضبوط کاغذوں میں ابھرے نقوش میں ضبط تحریر تھا۔

Root: ز ب ر

أَوَ لَمْ يَكُن لَّـهُـمْ ءَايَةً أَن يَعْلَمَهُۥ عُلَمَاءُ بَنِىٓ إِسْرَٟٓءِيلَ .١٩٧

  • Has this fact; that the learned men-Scholars-Clergy of Posterity of Iesraa'eel know-recognize it (Qur’ān), not been a tangible evidencepointer for them (idol worshippers) of its origin? [26:197]

کیا یہ بات ازخود سے ایسی شہادت نہیں ہے جو ان(عینی شہادت/معجزہ کا مطالبہ کرنے والے)کو  اس کے من جانب اللہ ہونے کا ادراک دے سکے کہ بنی اسرائیل کے صاحبان علم ا س(قرءان مجید)کو جانتے ہیں۔

وَلَوْ نَزَّلْنَٟهُ عَلَـىٰ بَعْضِ ٱلۡأَعْجَمِيـنَ .١٩٨

  • And had Our Majesty serially sent it (Qur’ān) upon some one of the Non-Arabs: [26:198]

چونکہ ان علماء کو پہلے سے علم ہے اس لئے اگر ہم جناب نے اس(قرءان مجید)کو عجمیوں میں سے کسی شخص پر بتدریج نازل کیا ہوتا؛

Root: ع ج م

فَقَرَأَهُۥ عَلَيْـهِـم مَّا كَانُوا۟ بِهِۦ مُؤْمِنِيـنَ .١٩٩

  • Whereupon he would have read it to them (Scholars-Clergy of Posterity of Iesraa'eel Jews and Christians) none of them would have accepted and believed in it [Qur’ān from non-Arab Messenger - rightly so since it would have then against the fact earlier revealed in the Books sent to them-] [26:199]

جس پر اس عرب میں بسنے والے عجمی نے اسے(قرءان)کو انہیں (علمائے بنی اسرائیل) پڑھ کر سنایا ہوتا تو یقیناً ان میں سے کسی نے اس (قرءان)پر ایمان نہ لایا ہوتا۔

كَذَٟلِكَ سَلَـكْنَٟهُ فِـى قُلُوبِ ٱلْمُجْرِمِيـنَ .٢٠٠

  • By narrating facts time and again Our Majesty has given it (Qur’ān) a way to penetrate into the hearts of the criminals who wish non serious jesting  [26:200]

اس طرح حقائق کو بیان کرکر کے ہم جناب نے اس (قرءان)کوان مجرمین کے قلوب میں ڈال دیا ہے جو اسے مزاح بنانے کے خواہش مند ہیں۔

Root: س ل ك

لَا يُؤْمِنُونَ بِهِۦ حَتَّىٰ يَرَوُا۟ ٱلْعَذَابَ ٱلۡأَلِيـمَ .٢٠١

  • Despite that they will not accept/believe in it (Grand Qur’ān), they will believe at time they would have seen the painful chastisement [26:201]

ان کے قلوب میں داخل ہو جانے کے باوجود  اس (قرءان مجید)پروہ  ایمان نہیں لائیں گے، وہ تب ایمان لائیں گے جب المناک عذاب دیکھ لیں گے۔

فَيَأْتِيَـهُـم بَغْتَةٙ

  • But that belief will be of no avail since it would come to them all of a sudden

مگر اس وقت ایمان لانا سودمند نہ ہو گا کیونکہ وہ (المناک عذاب )ان پر اچانک پہنچ جائے گا

وَهُـمْ لَا يَشْعُـرُونَ .٢٠٢

  • While they have no idea/perception/clue of it. [26:202]

جب انہیں اس بات کا احساس و شعور بھی نہیں ہو گا۔

فَيَقُولُوا۟ هَلْ نَـحْنُ مُنظَرُونَ .٢٠٣

  • Thereby having seen the befallen chastisement and pronouncing belief they would say, "Would we be reprieved?" [26:203]

دردناک عذاب دیکھ لینے اور ایمان کا اعلان کر لینے پر وہ کہیں گے"کیا ہم مہلت پانے والے بن سکیں گے (کہ صالح اعمال کریں)"۔

أَفَبِعَذَابِنَا يَسْتَعْجِلُونَ .٢٠٤

  • Do they yet seek [you the Messenger] hastening of Our punishment? [26:204]

اے رسول کریم(ﷺ)کیا یہ لوگ ہمارے عذاب کے جلدی ظہور پذیر ہونے کے خواش مند ہیں؟

Root: ع ج ل

أَفَرَءَيْتَ إِن مَّتَّعْنَٟهُـمْ سِنِيـنَ .٢٠٥

  • Have you the Messenger [Sal'lallaa'hoalaih'wa'salam] then thought that if Our Majesty made them enjoy for some years [26:205]

کیا آپ(ﷺ)نے ان کی عجلت کی خواہش کے حوالے سے یہ غور /تصورکیا ہے،کہ اگر ہم نے کچھ سالوں کے لئے اسباب دنیا ان کو دئیے ہیں؛

Root: س ن ه

ثُـمَّ جَآءَهُـم مَّا كَانُوا۟ يُوعَدُونَ .٢٠٦

  • Afterwards came to them that which they were being promised   [26:206]

بعد ازاں ان سالوں کے گزر جانے پر وہ ان کو پہنچ گیا جس کے متعلق ان سے وعدہ کیا جاتا رہا ہے

مَآ أَغْنَىٰ عَنْـهُـم مَّا كَانُوا۟ يُمَتَّعُونَ .٢٠٧

  • That which they had attained and were enjoying could not avail to avert anything from them. [26:207]

تومہلت کا وقت ختم ہو جانے پر ان سے سزا کی گرفت کو دور کرنے میں   وہ کچھ کام نہ آیا جو اسباب دنیا ان کو دیا جا رہا تھا۔

وَمَآ أَهْلَـكْنَا مِن قَرْيَةٍٛ إِلَّا لَـهَا مُنذِرُونَ .٢٠٨

  • Beware, Our Majesty did not annihilate any habitat unless for that were sent Warner/ Awakeners [26:208]

یہ حقیقت مدنظر رہے کہ ہم جناب نے کسی بھی بستی/قوم۔تہذیب کو نیست و نابود نہیں کیا سوائے ان حالات میں کہ  نتائج و عواقب سے پیشگی خبردار اور متنبہ کرنے والے بھیجے گئے تھے۔

ذِكْرَىٰ وَمَا كُنَّا ظَٟلِمِيـنَ .٢٠٩

  • For reminding - awakening before convicting them guilty; and Our Majesty have never been unjust. [26:209]

تنبیہ کی غایت یہ تھی کہ یاد رکھیں اور نصیحت لے لیں قبل اس کے کہ مجرم قرار پا کر سزا کے مستوجب ہو جائیں۔اور ہم جناب کبھی بھی زیادتی اور بے جا سزا دینے والے نہیں ہیں۔

وَمَا تَنَزَّلَتْ بِهِ ٱلشَّيَٟطِيـنُ .٢١٠

  • Realize it, the Devils did not self descend with it (Qur’ān)  [but other Angels accompanied and flanked Gib'raa'eil alai'his'slaam when it was brought] [26:210]

یاد رہے، شیاطین اپنے آپ اس(قرءان)کے ساتھ اوپر سے نیچے نہیں اترے تھے(جبرائیل علیہ السلام کے ساتھ ملائکہ اترے تھے)۔

وَمَا يَنۢبَغِى لَـهُـمْ وَمَا يَسْتَطِيعُونَ .٢١١

  • And neither is it possible/permitted for them; and nor can they self acquire the capability to author - rehearse it. [26:211]

اور نہ ایسا کرنا ان کے لئے  جائز قرار دیا گیا تھا اورنہ ان کے لئے یہ استطاعت حاصل کرنا ممکن تھا۔

إِنَّـهُـمْ عَنِ ٱلسَّمْعِ لَمَعْزُولُونَ .٢١٢

  • The fact is that they the Devils have certainly been banished from even listening it. [26:212]

حقیقت تو یہ ہے کہ وہ(شیاطین)اس کو سننے کی صلاحیت سے بھی محروم کر دئیے گئے ہیں۔

Root: ع ز ل

فَلَا تَدْعُ مَعَ ٱللَّهِ إِلَٟهًا ءَاخَرَ

  • Therefore warn everyone thatneither should you ever call/assign along with Allah the Exalted any other as iela'aha: godhead

چونکہ وہ سن نہیں سکتے اس لئے آپ ہر سننے والے کو متنبہ کر دیں"تجھے چاہئیے کہ اللہ تعالیٰ کے ساتھ ساتھ کسی اور کو بھی معبود سمجھ کر نہ پکارے۔

فَتَكُونَ مِنَ ٱلْمُعَذَّبِيـنَ .٢١٣

  • Whereupon/in consequence you may become one of the punished ones [26:213]

اگر ایسا کیا تو انجام کار تیراشمار بھی ان میں ہو گا جو مستوجب عذاب قرار پا چکے ہیں"۔

وَأَنذِرْ عَشِيـرَتَكَ ٱلۡأَقْرَبِيـنَ .٢١٤

  • And you the Messenger [Sal'lallaa'hoalaih'wa'salam] admonish/awake your near kinsmen [26:214]

اور آپ(ﷺ) اپنے قبیلہ ،جوآپ کے زیادہ قریبی حقدار ہیں،کو متنبہ فرمائیں۔

Root: ع ش ر

وَٱخْفِضْ جَنَاحَكَ لِمَنِ ٱتَّبَعَكَ مِنَ ٱلْمُؤْمِنِيـنَ .٢١٥

  • And you the Messenger [Sal'lallaa'hoalaih'wa'salam] stretch your hand of compassion especially for him who physically followed you in letter and spirit from amongst the claimants of belief. [26:215]

اور آپ(ﷺ)اپنا دست شفقت خصوصی طور پر اس کے لئے دراز کریں جس نے ایمان لانے والوں میں شامل ہو کر آپ کی خلوس سے پیروی کی ہے۔

فَإِنْ عَصَوْكَ فَقُلْ إِنِّـى بَرِىٓ ءٚ مِّمَّا تَعْمَلُونَ .٢١٦

  • Thereupon, in response to admonition if they refused to accept your word then you pronounce, "I am absolved from that which you people are doing". [26:216]

آپ کے متنبہ کر دینے کے باجود اگر انہوں(قبیلے والے)نے آپ کے بیان کو ماننے سے انکار کر دیا ہے تو پھر آپ یہ اعلان کر دیں"حقیقت یہ ہے کہ میں اس سے بری الذمہ ہوں جو عمل تم لوگ کرتے ہو:۔

وَتَوكَّلْ عَلَـى ٱلْعَزِيزِ ٱلرَّحِـيـمِ .٢١٧

  • And you the Messenger [Sal'lallaa'hoalaih'wa'salam] keep placing your reliance and dependence upon the All Pervasive/Dominant and the Fountain of Mercy [26:217]

اور آپ اپنی ذمہ داری انجام دے لینے پر اچھے نتائج کے لئے ان پر بھروسہ کریں جو دائمی،ہر لمحہ،ہر مقام پر مطلق غالب ہیں،اور منبع رحمت ہیں۔

ٱلَّذِى يَرَىٰكَ حِيـنَ تَقُومُ .٢١٨

  • The One Who keeps watching you the Messenger [Sal'lallaa'hoalaih'wa'salam] when you stand up [26:218]

وہ جناب جو مسلسل آپ کو دیکھتے رہتے ہیں جب آپ مصروف ہوتے ہیں

وَتَقَلُّبَكَ فِـى ٱلسَّٟجِدِينَ .٢١٩

  • And your movements/activities amongst those who prostrate. [26:219]

اور جب   جب آپ ازخود سجدہ گزاروں کی جانپ پلٹتے ہیں۔

إِنَّهُۥ هُوَ ٱلسَّمِيعُ ٱلْعَلِيـمُ .٢٢٠

  • The fact remains that He the Exalted is eternally the All-Listening, the All-Knowing. [26:220]

ان جناب کےمتعلق یہ حقیقت ہے، ہر لمحہ ہر آواز کو سننے والے ہیں، منبع علم ہیں۔


هَلْ أُنَبِّئُكُـمْ عَلَـىٰ مَن تَنَزَّلُ ٱلشَّيَٟطِيـنُ .٢٢١

  • Shall I inform you upon whom the Shaiteen/Devils descend? [26:221]

کیا میں تمہیں ہر وقت خبردار کرتا رہوں کہ کس پر شیطان صفت جن و انس ازخود اترتے رہتے ہیں؟

تَنَزَّلُ عَلَـىٰ كُلِّ أَفَّاكٍ أَثِيـمٛ .٢٢٢

  • They descend upon each one of perfidiously lying sinner. [26:222]

وہ ازخود ہر اس شخص کے پاس ڈیرہ جماتے ہیں جو ہٹ دھرمی سے آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر بھی جھوٹ بولتا ہے اور ہمیشہ اچھائی سے کوتاہی کرتا ہے۔

Root: ء ف ك

يُلْقُونَ ٱلسَّمْعَ وَأَكْثَرُهُـمْ كَٟذِبُونَ .٢٢٣

  • They spread - throw before people the hearsay and most of them are liars. [26:223]

وہ دلفریب باتیں سماعتوں میں ڈالتے ہیں اور ان کی اکثریت جھوٹ بولنے والے ہیں۔

وَٱلشُّعَـرَآءُ يَتَّبِعُهُـمُ ٱلْغَاوُۥنَ .٢٢٤

  • Know about the Poets, only the transgressors-deviants follow them in letter and spirit. [26:224]

(اور خبردار کروں)عمومی طور پر جانے پہچانے شاعروں کی شوق سے پیروی وہ کرتے ہیں  جوحدوں سے تجاوز وشیطانی ،راست سے بھٹکے برباد ہوئے  لوگ ہیں۔

Root: غ و ى

أَ لَمْ تَرَ أَنَّـهُـمْ فِـى كُلِّ وَادٛ يَـهِيمُونَ .٢٢٥

  • Have you not noticed that they roam-wander about in imagination in every valley-vacuity. [26:225]

کیا آپ نے نہیں دیکھا کہ وہ(شاعر)پیاسے اونٹوں کی طرح تخیل کی ہر وادی میں آوارہ گردی کرتے رہتے ہیں۔

Root: ھ ى م; و د ى

وَأَنَّـهُـمْ يَقُولُونَ مَا لَا يَفْعَلُونَ .٢٢٦

  • Moreover, they the poets narrate to people that which they themselves do not act upon. [26:226]

اور یہ کہ وہ  ایسی باتیں کہتے رہتے ہیں جن پر خود انہوں نے ایک بار بھی عمل نہیں کیا۔

إِلَّا ٱلَّذِينَ ءَامَنُوا۟ وَعَمِلُوا۟ ٱلصَّٟلِحَـٟتِ وَذَكَرُوا۟ ٱللَّهَ كَثِيـرٙا

  • The exception is for those who have since accepted/believed and they performed deeds/acts righteously/moderately [as directed in the Book of Allah prevalent in time and space] and they remembered and mentioned Allah the Exalted frequently

یہ بات سوائے ان کے جو ایمان لے آئے اور صالح اعمال پر کاربند ہو گئے اور کثرت سے اللہ تعالیٰ کا ذکر کرتے رہے سب شعراء پر لاگو ہوتی ہے۔

وَٱنتَصَرُوا۟ مِنۢ بَعْدِ مَا ظُلِمُوا۟ۗ

  • And they helped themselves after that they were subjected to injustice. [with Salaat and coolly perseverance].

اور انہوں نے اپنی مدد آپ کے تحت صلوٰۃ اورعزم سے اپنے پر ظلم و ستم ہونے کے باوجود خود کو محکم کیا۔

وَسَيَعْلَمْ ٱلَّذِينَ ظَلَمُوٓا۟ أَىَّ مُنقَلَبٛ يَنقَلِبُونَ .٢٢٧

  • And soon shall know those who did injustices what upset they will be turned to. [26:227]

اور جنہوں نے ظلم و ستم کیا وہ جلد جان لیں گے کہ کون حیثیت میں اوندھا ہو کراوندھا ہی رہے گا۔

027- سُوۡرَةُ النمل

Granular/Forensic Analysis: Letters; vowels; syllables; words

Sura Recitation


طسٓۚ

  • Two conjoined/sewn consonants of Arabic alphabet ( أبجدية عربية‎); First consonant Ta , it has no additional sign/mark suggesting its pronunciation with its normal sound; the last conjoined consonant Seen ـسـ has above it ancillary glyph/prolongation sign/mark which extends/stretches the sound value of the letter to which it is added. Prolongation sign/mark is found whenever the following word begins with still letter. Letter  ـسـ is followed by/ends in still "noon" and so the prolongation sign "Madda" indicates its pronunciation as "See'n".

عربی زبان کے حروف ’’ط‘‘اور باہمدگر حرف ’’س‘‘ بمع آواز کی طوالت کانشان۔

تِلْكَ ءَايَٟتُ ٱلْقُرْءَانِ

  • These are the Aa'ya'at: Unitary Passages of the Qur’ān;

یہ  زیر بیان القرء ان کی( آیات)باعث ادراک و فہم جزئیات  ہیں۔

وَكِتَابٛ مُّبِيـنٍٛ .١

  • And these are passages of a book; its peculiar feature is that it is penned in individuated segments that render each distinct and explicit  [27:01]

اور یہ  ایک کتاب  کی( آیات)باعث ادراک و فہم جزئیات  ہیں جس کا وصف یہ ہے  کہ ہر ایک موضوع/topic-concept الگ تھلگ انداز میں مضمون/پیرائے کی صورت قلمبند کیا گیا ہےجو کہ ہر بات کو متمیز،حقائق مستور اور حقیقت  منکشف کر دینے والاہے۔

۔قرءان مجید کا سرچشمہ:ام الکتاب

هُدٙى وَبُشْـرَىٰ لِلْمُؤْمِنِيـنَ .٢

  • This (Qur’ān) is guidance: regulatory information for aright conduct in every moment of life, and conveyer of glad tidings for those who have heartily accepted-believed in it  [27:02]

اوریہ (آیات قرء ان)ایمان والوں کے لئے ہدایت، رہنمائی اوراچھے انجام کی خوشخبری،ضمانت دیتی ہیں۔

ٱلَّذِينَ يُقِيمُونَ ٱلصَّلَوٰةَ وَيُؤْتُونَ ٱلزَّكَوٰةَ

  • Such of them who stand for the performance of As-sa'laat: Time Bound Protocol of Servitude and allegiance; and regularly pay Az-zaka'at: financial liability for economic uplift of society

وہ مدعیان ایمان جواستقلال و استقامت ؍منظم طریقے سے صلوٰۃ کی ادا ئیگی کرتے ہیں اوراور معاشرے کے نطم و نسق اور معاشی اٹھان کے لئے مالی تعاون ؍ زکوۃ کی ادائیگی کرتے رہتے ہیں۔ 

Root: ز ك و

وَهُـم بِٱلۡءَاخِـرَةِ هُـمْ يُوقِنُونَ .٣

  • Know it; they are the people who convincingly believe in the Hereafter. [27:03]

اور وہ ایسے ایمان والے ہیں وہ آخرت پر غیر متزلزل یقین رکھتے ہیں۔

إِنَّ ٱلَّذِينَ لَا يُؤْمِنُونَ بِٱلۡءَاخِـرَةِ زَيَّنَّا لَـهُـمْ أَعْمَٟلَـهُـمْ

  • Know the fact about those who believe not in the HereafterOur Majesty have let their volitional acts alluring for them

جہاں تک ان لوگوں کا تعلق ہے جو آخرت کے موجود ہونے کو ماننے سے انکار پر بضد رہتے ہیں ہم جناب نے ان کے اعمال کو ان کے لئے سامان تزئین رہنے دیا ہے۔

فَهُـمْ يَعْمَهُونَ ٤

  • Whereby they are wandering distractingly [27:04]

اس سوچ اور رویئے کے اشتراک کی بنا وہ بیوقوفانہ، احمقانہ، بہکی سرگرمیوں  میں سرگرداں رہتے ہیں۔

أُو۟لَـٰٓئِكَ ٱلَّذِينَ لَـهُـمْ سُوٓءُ ٱلْعَذَابِ

  • They are the peoplecertain terrible affliction is prepared and is in wait for them

یہ ہیں وہ لوگ۔جسمانی اور نفسیاتی تکلیف دہ سزا ان کے لئے تیار اور منتظر ہے۔

وَهُـمْ فِـى ٱلۡءَاخِـرَةِ هُـمُ ٱلۡأَخْسَـرُونَ ٥

  • And they will realize that they are the greatest - perishing losers in the Hereafter. [27:05]

اور یہ ہی وہ لوگ ہیں جو آخرت میں بدترین نقصان اٹھانے والے ہیں۔

وَإِنَّكَ لَتُلَقَّى ٱلْقُرْءَانَ مِن لَّدُنْ حَكِيـمٍٛ عَلِيـمٍ٦

  • Let it be on record, You the Messenger [Muhammad Sal'lallaa'hoalaih'wa'salam] are the one to whom is presentedfor self observing the Qur’ān (its orthography)by the Grace of the Infinitely Just Supreme Administrator of the created realms; He the Exalted is the Setter of knowledge-sciences of visible and invisible domains. [27:06] 

یہ حقیقت ریکارڈ پر رہے،یقیناً آپ(ﷺ) ہیں جنہیں  مسودہ قرءان مجید ان جناب کی جانب سے  دستی پیش کیا جا رہا ہے جو تمام نظام کے فرمانروا ہیں اور منبع علم ہیں۔

Root: ل د ن


إِذْ قَالَ مُوسَـىٰ لِأَهْلِهِۦٓ

  • Relate the episode whentravelling after having left city of MadyanMūsā [alai'his'slaam] said to his accompanying family:

ان کی سوانح عمری کے متعلق مزید مطلع ہوں جب موسیٰ (علیہ السلام) نے اپنے ہم سفر اہل خانہ سے کہا:

إِنِّـىٓ ءَانَسْتُ نَارٙا سَـَٔاتِيكُـم مِّنْـهَا بِخَبَـرٍٛ

  • "Indeed I have seen and perceived fire[by the side of At-Tur, I am going there]soon I will get back to you bringing some guiding information from there

"یہ حقیقت ہے کہ میں نے دور آگ کے موجود ہونے کو محسوص کیا ہے۔ اس لئے میں جلد وہاں سے کوئی اطلاع لے کر تم لوگوں کے پاس لوٹ آؤں گا۔

أَوْ ءَاتِيكُـم بِشِهَابٛ قَبَسٛ لَّعَلَّـكُـمْ تَصْطَلُونَ ٧

  • And/Or I will bring to you people some fire-balls so that you may warm yourselves. [27:07]

یا میں وہاں سے سلگتے کوئلے لے کر تمہارے پاس آ جاؤں گا تاکہ تم گرمائش کے لئے سینک سکو"۔

Root: ش ھ  ب;  ص ل ى;  ق ب س

فَلَمَّا جَآءَهَا نُودِىَ أَنۢ بُورِكَ مَن فِـى ٱلنَّارِ وَمَنْ حَوْلَـهَا

 
  • Thereby, departing from his family as soon he reached her it was loudly told that, "Perpetual -Continuity of Existence beyond change against every thing else is He Who is present in the space within the Fire burning before your eyes and He Who is concurrently everywhere around her the Omnipresent

اہل خانہ سے روانہ ہو کر جوں ہی وہ (موسیٰ علیہ السلام)اس کے پاس پہنچ گئے انہیں پکارکر بتایا گیا کہ انہیں ہر شئے کے مقابل دوام اور ثبات ہے جو تمہارے سامنے اس جلتی آگ کے اندر خلا میں موجود ہیں اور جو بیک وقت اس آگ کے اردگرد ماحول میں بھی موجود ہیں۔

وَسُبْحَٟنَ ٱللَّهِ رَبِّ ٱلْعَٟلَمِيـنَ ٨

  • And Infinite Glory is for Allah the ExaltedHis pleasure is the focus of all effort; He is the Sustainer Lord of the Worlds - All that exists." [27:08]

اللہ تعالیٰ حاجات سے بلند تر ہیں،تمام کبریائی ان کے لئے،اور تمام کوششوں کا وہ محور ہیں۔وہ موجود و معلوم تخلیق کردہ دنیاؤں ؍ہر ایک وجود پذیرکے رب ہیں۔

يَٟمُوسَـىٰٓ إِنَّهُۥٓ أَنَا ٱللَّهُ ٱلْعَزِيزُ ٱلْحَكِيـمُ ٩

  • "O Mūsā! Listen the fact He the Omnipresent is Me, I am Allah, the All Dominant and Pervasive, the Setter of knowledge - science of visible and invisible domains". [27:09]

اس پکار میں انہوں نے یہ سنا"اے موسیٰ!توجہ سے اس حقیقت کو سن؛ میں اللہ تعالیٰ ہوں؛میں دائمی،ہر لمحہ،ہرمقام پرمطلق غالب ہوں۔ اوربدرجہ اتم انصاف پسند تمام موجود کائنات کا فرمانروا اور تمام پنہاں کو جاننے والا ہوں

وَأَ لْقِ عَصَاكَۚ

  • And (he was asked after he narrated his knowledge and perception about his stick) "you throw in front your stick."

اور انہوں نے مزید سنا"آپ اپنی عصا کو اپنے سامنے زمین پر پھینک دیں"۔

Root: ع ص و

فَلَمَّا رَءَاهَا تَـهْتَزُّ كَأَنَّـهَا جَآنّٚ

  • Thereby, as soon he threw her in front, he saw it crawling at her own accord like as if she were a cobra

تعمیل حکم پر جوں ہی انہوں نے چھڑی پھینک دی تو دیکھا کہ وہ تو ازخود اس انداز میں حرکت کر رہی ہے جیسے وہ حقیقت میں کوبرا سانپ ہے۔

Root: ھ ز ز

وَلَّـىٰ مُدْبِرٙا وَلَمْ يُعَقِّبْۚ

  • He about-faced with his back towards snake and he did not see behind. [He seems to be aware that Cobra can spray poison from distance targeting eyes]

تو وہ فوراً پیٹھ موڑ کر بھاگ گئے اور انہوں نے پیچھے منہ موڑ کر نہیں دیکھا(ظاہر ہوتا ہے وہ جانتے تھے کوبرا آنکھوں پر زہر دور سے پھینک سکتا ہے)۔

يَٟمُوسَـىٰ لَا تَخَفْ إِنِّـى لَا يَخَافُ لَدَىَّ ٱلْمُرْسَلُونَ ١٠

  • [Allah called him] "O Mūsā! do not fear, indeed I am here; the nominated Messengers do not feel fear in My presence [being protected ones-28:31] [27:10]

انہیں پکارا گیا"اے موسیٰ؛(واپس اس مقام پرروبرو ہوں) تجھے ڈرنا نہیں چاہئے۔یہ حقیقت ہے کہ میں یہاں ہوں۔میرے حضور ہوتے ہوئے رسول مقرر کر کے بھیجے جانے والے خوف محسوس نہیں کرتے۔

إِلَّا مَن ظَلَمَ ثُـمَّ بَدَّلَ حُسۡنَۢا  بَعْدَ سُوٓءٛ فَإِنِّـى غَفُورٚ رَّحِـيـمٚ ١١

  • Except the one who acted without prior permission and thereafter substituted with balanced approach after the omission then indeed I am Oft-forgiving and Merciful. [27:11]

سوائے اس کے جس نے فرائض رسالت سے ازخود ہٹا لیا،بعد ازاں احساس کر لینے اور تکلیف سہہ لینے پر انہوں نے بہتر حسن کارکردگی میں تبدیل کر دیا توہم نے درگزر کر دیا کیونکہ ہمارے بارے یہ حقیقت ہے کہ اکثر و بیشتر کوتاہیوں سے پردہ پوشی کرتے ہوئے معاف فرمانے والے ہیں، منبع رحمت ہیں۔

وَأَدْخِلْ يَدَكَ فِـى جَيْبِكَ تَخْرُجْ بَيْضَآءَ مِنْ غَيْـرِ سُوٓءٛۖ

  • And enter your hand into your neckbandtowards Axilla/armpit, she/palm will come out as pure shining white without any spot

اور اپنے ہاتھ کو گریبان میں ڈال کراپنی بغل میں ضم کریں۔باہر نکالنے پر اس کی ہتھیلی  سفید چمکتی حالت میں ہو گی،ہر قسم کے داغ دھبے سے منزا۔

فِـى تِسْعِ ءَايَٟتٍٛ إِلَـىٰ فِرْعَوْنَ وَقَوْمِهِۦٓۚ

  • These two are included in Nine unprecedented displaysmiraculous signs towards Fir'aoun/ Pharaoh and his nation.

یہ دونوں  نو عدد عینی مشاہدہ  کے لئے ان شہادتوں (آیات/معجزات )میں شمار ہیں  جن کی مصاحبت میں  آپ فرعون اور اس کی قوم کی جانب روانہ ہو رہے ہیں  جوتصور، تجربہ، سائنسی توجیح سے ماورائے اِدراک  ہوتے ہوئے اس حقیقت کی جانب  واضح رہنمائی کریں گی  کہ من جانب اللہ  سند اور برھان ہیں۔

إِنَّـهُـمْ كَانُوا۟ قَوْمٙا فَٟسِقِيـنَ ١٢

  • Indeed they have been a people deviants and limits violator. [27:12]

ان کے متعلق یہ حقیقت ہے کہ وہ ایک ایسی قوم ہیں جن کی سرشت وعدہ خلافی اورطے شدہ معاملات سے تنفر انگیز علیحدگی اختیار کرنا ہے"۔

Root: ف س ق

فَلَمَّا جَآءَتْـهُـمْ ءَايَٟتُنَا مُبْصِرَةٙ

  • Thereupon, when Our Aa'ya'at: unprecedented displays came to them that were luminous:

مگر جوں ہی تصور،تجربہ،سائنسی توجیح سے ماورا ہماری شہادتیں(آیات/معجزات)ان کو پہنچ گئیں،روز روشن کی طرح بصیرت افروز انداز میں:

قَالُوا۟ هَـٰذَا سِحْرٚ مُّبِيـنٚ ١٣

  • [but despite that] They remarked, "It is evident visual illusion". [27:13]

توانکار کرنے والے عمائدین نے کہا"یہ تو سوائے صریحاً طلسماتی شعبدہ بازی اور فریب نظر کے حقیقت میں کچھ نہیں"۔

Root: س ح ر

وَجَحَدُوا۟ بِـهَا وَٱسْتَيْقَنَتْـهَآ أَنفُسُهُـمْ ظُلْمٙا وَعُلُوّٙاۚ

  • And they contradicted about them (unprecedented displays) behaving unfairly and in self-exaltation-aggrandisement though their inner-selves had become deeply convinced about them (sign - unprecedented displays).

اور انہوں نے ان کے بارے حقیقت کے منافی اور خود پرستانہ عظمت کے زعم میں حیل و حجت کے روئیے کو اپنائے رکھاباوجود اس کے کہ ان کے نفوس نےان  (معجزات)کے من جانب اللہ ہونے کا یقین کر لیا تھا۔

فَٱنظُرْ كَيْفَ كَانَ عَٟقِبَةُ ٱلْمُفْسِدِينَ ١٤

  • Thereby (to reduce sense of your grief), keep in mind as to what was the upshot of the people of past who creators of distortions, divergences, intellectual corruption in the society? [27:14]

اس لئے(اپنے احساس غم کو کم کرنے کےلئے)آپ (ﷺ)اس بات کو پیش نظر رکھیں کہ ماضی میں  علمی اور فکری بگاڑ پیدا کرنے والوں کا آخر کار کیا انجام ہوا تھا۔


وَلَقَدْ ءَاتَيْنَا دَاوُۥدَ وَسُلَيْمَٟنَ عِلْمٙاۖ

  • Know the past history, Our Majesty had indeed imparted knowledge to Da'wued and Sulie'maan [alai'him'slaam]

قدیم تاریخ سے آگاہ ہو جاؤ؛یہ حقیقت ہے کہ ہم جناب نے داوود اور سلیمان (علیہما السلام)کو علم عنایت فرمایا تھا۔

وَقَالَا ٱلْحَمْدُ لِلَّهِ ٱلَّذِى فَضَّلَنَا عَلَـىٰ كَثِيـرٛ مِّنْ عِبَادِهِ ٱلْمُؤْمِنِيـنَ ١٥

  • Acknowledging it they both said, "The Infinite Glory and Praise eternally is entirely and exclusively for Allah the Exalted, the One Who has given us distinction in knowledgeability upon most of His believing allegiant". [27:15]

اور  ان دونوں  نے اس  عنایت علمیت کا اعتراف کرتے ہوئے کہا"اللہ تعالیٰ کیلئے عظمت وبرتری وشرف و کبریائی کو بیان کرتی حمد ہمیشہ کیلئے مختص  ہے۔وہ جناب ہیں جنہوں نے اپنے صدق قلب سے ایمان لانے والے بندوں کی اکثریت پر ہمیں اس معاملے میں ترجیح اور افضلیت  سے نوازا ہے۔

وَوَرِثَ سُلَيْمَٟنُ دَاوُۥدَۖ

  • And Sulie'maan [alai'his'slaam seems to be his only son] inherited the wealth and legacy of Da'wued [alai'his'slaam]

اور سلیمان(علیہ السلام)داوود(علیہ السلام)کی وفات پر ان کے وارث بنے۔

Root: و ر ث

وَقَالَ يَـٰٓأَيُّـهَا ٱلنَّاسُ عُلِّمْنَا مَنطِقَ ٱلطَّيْـرِ

  • And he (Sulie'maan alai'his'slaam) said, "O people, we have been taught the language - communicating sounds of the birds

جان لو؛انہوں (سلیمان علیہ السلام)نے خطاب کرتے ہوئے فرمایا"اے لوگو سنو؛ہمیں پرندوں کے صوتی انداز مواصلت کو سمجھنے کے علم سے بہرا مند فرمایا گیا ہے۔

Root: ن ط ق

وَأُوتِينَا مِن كُلِّ شَـىْءٛۖ

  • And we have been given partly all sorts of material thing

اور ہمیں  ہر طرح کےاسباب دنیا میں سے عنایت فرمایا گیا ہے۔

إِنَّ هَـٰذَا لَـهُوَ ٱلْفَضْلُ ٱلْمُبِيـنُ ١٦

  • Undoubtedly this (knowledge and worldly wherewithal) is certainly that which is the manifest grant of distinction and blessing." [27:16]

یقیناً یہ (عنایت علمیت اور اسباب دنیا)بلاشبہ  نمایاں  فضل کا اظہار ہے۔

وَحُشِـرَ لِسْلَيْمَٟنَ جُنُودُهُۥ مِنَ ٱلْجِنِّ وَٱلْإِنسِ وَٱلطَّيْـرِ

  • Know it, for Sulie'maan [alai'his'slaam] his troops comprising of the Jinn species and the human beings and the birds were assembled

اس دور کی تاریخ جان لو؛سلیمان(علیہ السلام)کے ایک مشن کے لئے ان کے لشکروں کو اکٹھا کیا گیا جو جنات اور انسانوں اور پرندوں پر مشتمل تھے۔

فَهُـمْ يُوزَعُونَ ١٧

  • Whereupon they were organized in flanks   [27:17]

مجتمع ہو جانے پر انہیں صف بستہ کر دیا گیا۔

حَتَّىٰٓ إِذَآ أَتَوْا عَلَـىٰ وَادِ ٱلنَّمْلِ

  • They marched until when they arrived upon upon the valley - colony of certain Ant species

لشکر رواں دواں ہو کر جب ایک مخصوص جنس کی چیونٹیوں کی وادی میں پہنچا۔

Root: و د ى

قَالَتْ نَمْلَةٚ يَـٰٓأَيُّـهَا ٱلنَّمْلُ ٱدْخُلُوا۟ مَسَٟكِنَكُـمْ

  • She-Ant imperatively said, "O you the Ants listen! you (masculine plural -male and female ants) enter your respective dwellings - nests

ملکہ چیونٹی نے حکم دیا"اے چیونٹوں،اپنے مساکن /بلوں میں داخل ہو جاؤ۔

لَا يَحْطِمَنَّكُـمْ سُلَيْمَٟنُ وَجُنُودُهُۥ وَهُـمْ لَا يَشْعُـرُونَ ١٨

  • Sulie'maan [alai'his'slaam] and his troops will not thenceforth crumble you; (otherwise you will get crumbled under their feet) while they will not even be aware of it". [27:18]

سلیمان (علیہ السلام)اور ان کے لشکر کہیں تمہیں کچل نہ دیں اس حال میں کہ  انہیں اس  کا احساس و شعور بھی  نہ ہو "۔

فَتَبَسَّمَ ضَاحِكٙا مِّن قَوْلِـهَا

  • Thereon, having heard, he (Sulie'maan alai'his'slaam) smiled feeling amused by her commanding statement  —

چونکہ وہ ان کے انداز بیان کو سمجھتے تھے اس(ملکہ چیوٹی)کے قول کی فصاحت و بلاغت سے لطف اندوز ہوتے ہوئےمسکرائے۔

Root: ض ح ك

وَقَالَ رَبِّ أَوْزِعْنِىٓ أَنْ أَشْكُرَ نِعْمَتَكَ ٱلَّتِـىٓ أَنْعَمْتَ عَلَـىَّ وَعَلَـىٰ وَٟلِدَىَّ

  • And he said, "O my Sustainer Lord! Enable me [restraint to feel proud] that I may acknowledge with gratitude Your Favour which You have showered upon me and upon my parents (it is also exactly in 46:15)

اور انہوں نے کہا"اے میرے رب!مجھے خواہشات نفس پر قابو پانے کی استطاعت نصیب فرما کہ میں آپ جناب کی عنایات کا شکر ادا کروں جو آپ نے مجھ پر اور میرے والدین کو نوازا ہے۔

Root: و ز ع

وَأَنْ أَعْمَلَ صَٟلِحٙا تَرْضَىٰهُ

  • And that I may conduct with that perfection which You the Exalted appreciatively approve

اور یہ کہ میں صالح اعمال پر عمل پیرا رہوں  اس نیت سے کہ وہ  آپ کی رضا مندی /پذیرائی پانے کا موجب ہو۔

وَأَدْخِلْنِى بِرَحْـمَتِكَ فِـى عِبَادِكَ ٱلصَّٟلِحِيـنَ ١٩

  • And do enter me with Your Mercy amongst Your sincere perfectionists". [27:19]

اور از راہ کرم آپ جناب  مجھے اپنی رحمت سے اپنے ان بندوں میں شامل کریں جنہیں آپ صالح قرار دیتے ہیں"۔

وَتَفَقَّدَ ٱلطَّيْـرَ فَقَالَ مَالِـىَ لَآ أَرَى ٱلْـهُدْهُدَ أَمْ كَانَ مِنَ ٱلْغَآئِبِيـنَ ٢٠

  • Know it, he found certain bird missing whereupon he said, "Why is it so to me that I do not see the Hoopoe, or has he been the absentee? [27:20]

اور انہوں نے معائنہ کرتے ہوئے  پرندے کو غائب پایا؛اس پر انہوں نے کہا"کیا وجہ ہے کہ میں ہدہد کو نہیں دیکھ پا رہا۔یا وجہ یہ ہے کہ وہ موقع پر سے غائب ہو گیا ہے۔

Root: ف ق د

لَأُعَذِّبَنَّهُۥ عَذَابٙا شَدِيدًا أَوْ لَأَا۟ذبَحَنَّهُۥٓ أَوْ لَيَأْتِيَنِّى بِسُلْطَٟنٛ مُّبِيـنٛ ٢١

  • Of course, if so I will definitely punish him with severe punishment or I will slaughter him unless he submits explanation with valid reason/evidence," [27:21]

میں اسے سزا دوں گا،شدید نوعیت کی سزا ؛یا میں اسے ذبح کر دوں گا؛وگرنہ میرے پاس اپنے غیر حاضر ہونے کا معقول اور واضح ثبوت   وہ پیش کرے"۔

Root: ذ ب ح;  س ل ط

فَمَكَثَ غَيْـرَ بَعِيدٛ

  • Thereafter, he waited/stayed but for a little while that he arrived

یہ کہنے کے بعد انہوں  کچھ زیادہ دیر انتظار نہیں کیا کہ وہ آ گیا۔

Root: م ك ث

فَقَالَ أَحَطتُ بِمَا لَمْ تُحِطْ بِهِۦ وَجِئْتُكَ مِن سَبَإِۭ  بِنَبَإٛ يَقِيـنٍ ٢٢

  • Being questioned he said, "I have comprehensively known a thing which your Majesty have not yet come to know about that and I have brought to you from Saba a confirmed news. [27:22]

حاضر ہو کر اس(ہدہد)نے کہا"میں نے اس بات کو معلوم کیا ہے جس کے بارے معلومات آپ کے احاطہ علم میں نہیں۔اور آپ کے پاس سباء سے ایک حتمی خبر لایا ہوں۔

Root: ح و ط

إِنِّـى وَجَدتُّ ٱمْرَأَةٙ تَمْلِـكُهُـمْ

  • Indeed I have found that a woman rules them

میں نے وہاں پایا کہ ایک عورت ان پر حکمرانی کرتی ہے۔

Root: م ر ء; م ل ك

وَأُوتِيَتْ مِن كُلِّ شَـىْءٛ

  • And she has been given all sorts of wherewithal

اور اس عورت کو ہر طرح کا سامان زیست عنایت کیا گیا ہے۔

وَلَـهَا عَـرْشٌ عَظِيـمٚ ٢٣

  • And a grand throne is the seat for her. [27:23]

اور ایک عالی شان تخت اس کے بحثیت حکمران بیٹھنے کے لئے ہے۔

Root: ع ر ش

وَجَدتُّـهَا وَقَوْمَهَا يَسْجُدُونَ لِلشَّمْسِ مِن دُونِ ٱللَّهِ

  • I found her (the Queen) and her nation that they prostrate for the Sun, instead of Allah the Exalted.

میں نے اسے اور اس کی قوم کو اللہ تعالیٰ کے علاوہ سورج کے لئے سجدہ ریز ہوتے ہوئے پایا ہے۔

Root: س ج د; ش م س

وَزَيَّنَ لَـهُـمُ ٱلشَّيْطَٟنُ أَعْمَٟلَـهُـمْ فَصَدَّهُـمْ عَنِ ٱلسَّبِيلِ

  • And Shaitan has made their deeds/acts alluring for them thereby he stopped them from the Path

اور شیطان نے ان کے اس طرز عمل کو جس پر وہ کاربند ہیں ان کے لئے  باتکرارخوشنما اور دل کش بنا دیا ہے۔اور یوں انہیں  راہ راست سے موڑ /منحرف کردیا ہے۔

 

فَهُـمْ لَا يَـهْتَدُونَ ٢٤

  • Thereby, they guide not their selves aright. [27:24]

اس کا شاخسانہ یہ ہے کہ وہ  متمنی ہدایت نہیں ہوتےـ۔

أَلَّا يَسْجُدُوا۟ لِلَّهِ ٱلَّذِى يُخْرِجُ ٱلْخَبْءَ فِـى ٱلسَّمَٟوَٟتِ وَٱلۡأَرْضِ

  • [Shaitan has allured them] That they might not prostrate for Allah the Exalted, the One Who brings to light/prominence that which is hidden in the Skies and the Earth."

شیطان نے ان کے اعمال کو خوشنما اس لئے بنایا تھا کہ وہ اللہ تعالیٰ کے لئے سربسجود نہ ہوں جو جناب  اس کو جو آسمانوں اور زمین میں پوشیدہ ہے باہر نکالتے رہتے ہیں"۔

Root: س ج د

وَيَعْلَمُ مَا تُخْفُونَ وَمَا تُعْلِنُونَ ٢٥

  • And He the Exalted fully knows that which you people hide and that which you people reveal/say openly. [27:25]

متنبہ رہو؛اللہ تعالیٰ اسے بخوبی جانتے ہیں جو تم سینوں میں پوشیدہ رکھتے ہو اور اس کو جو تم لوگ کھل کر کہتے ہو۔

Root: ع ل ن

ٱللَّهُ لَآ إِلَـٰهَ إِلَّا هُوَ

  • Allah the Exalted is all alone the living Iela'aha: Sovereign Sustainer Lord; None at all in miscellany of iela'aha: deities that are uncritically admired, adorned and worshipped is alive or organizes, administers or sustains others except He the Solitary Sustainer Lord, the Absolute.

اللہ تعالیٰ کے متعلق یہ حقیقت جان لو—ان تمام کے تمام میں جنہیں معبود تصور کیا جاتا ہے کوئی ذی حیات نہیں،سوائے ان (اللہ تعالیٰ) کے۔

Thesis statement of Qur’ān

رَبُّ ٱلْعَـرْشِ ٱلْعَظِيـمِ۩ ٢٦

  • He is the Sustainer Lord of the Exalted Seat of the Sovereign. [beyond the Skies of universe]. [27:26-Please prostrate, it makes us nearer to our Sustainer Lord]

 وہ جناب یکتا اور عظیم الشان تخت اقتدار کے رب ہیں۔

Root: ع ر ش

قَالَ سَنَنظُرُ أَصَدَقْتَ أَمْ كُنتَ مِنَ ٱلْـكَـٟذِبِيـنَ ٢٧

  •  He said, "We will soon verify whether you told the truth or you were one of the liars. [27:27]

سلیمان علیہ السلام نے کہا"ہم جلد اس کا جائزہ لیں گے کہ کیا تم نے سچ بیان کیا ہے یا  دروغ گوئی کرنے والوں میں سے تو ثابت ہوتا ہے۔

ٱذْهَب بِّكِتَٟبِى هَـٰذَا فَأَ لْقِهْ إِلَيْـهِـمْ

  • [where after he drafted a letter] He commanded, "You go with mine letter, this one; upon reaching there throw it towards them that they see it

  • تو میرے خط کو لے کر رونہ ہو جا،یہ پکڑ؛جب وہاں پہنچ جائے تو اسے زمین پر اس طرح ڈال دے کہ وہ دیکھ لیں۔

ثُـمَّ تَوَلَّ عَنْـهُـمْ فَٱنظُرْ مَاذَا يَرْجِعُونَ ٢٨

  • Thereafter, get away from them, then [seeing they found the letter] watch as to how they react to it." [27:28]

  • بعد ازاں یہ دیکھ کر کہ انہوں نے خط اٹھا لیا خود کو ان سے پھیر لینا۔پھر کسی جگہ سے دیکھنا کہ وہ اس پر کیا رد عمل دکھاتے ہیں"۔


قَالَتْ يَـٰٓأَيُّـهَا ٱلْمَلَؤُا۟

  • She said, "O you the Chiefs!Please listen:

ان محترمہ(ملکہ سبا)نے کہا’’معزز سردارو؛توجہ کریں۔

Root: م ل ء

إِنِّـىٓ أُلْقِىَ إِلَـىَّ كِتَٟبٚ كَرِيـمٌ ٢٩

  • Indeed an excellent letter has been placed before me [27:29]

آپ کے علم میں اس حقیقت کو لانا ہے کہ ایک انتہائی نفیس مکتوب کو میرے روبرو پیش کرنے کے لئے بھیجا گیا ہے۔

Root: ك ر م

إِنَّهُۥ مِن سُلَيْمَٟنَ وَإِنَّهُۥ

  • Indeed it is sent by Suleimanand it preludes[Quote]

یہ (مکتوب)سلیمان (علیہ السلام)نے مجھے پہنچانے کے لئے بھیجا ہے۔اور اس کا ابتدائیہ یہ ہے:

بِسْمِ ٱللَّهِ ٱلرَّحْـمَـٰنِ ٱلرَّحِـيـمِ ٣٠

  • "Ar'Reh'maan: the Personal Name of Allah the Exalted is the recourse. Ar'Reh'maan is eternally the Fountain of Infinite Mercy." [27:30]

’’اللہ تعالیٰ کے اسم ذات الرَّحمٰن سے ابتدا ہے،وہ جناب منبع رحمت ہیں۔

أَ لَّا تَعْلُوا۟ عَلَـىَّ وَأْتُونِـى مُسْلِمِيـنَ ٣١

  • That you people should not exalt yourselves upon me, and join-come to mein the condition of voluntary submitters-peacemakers." [27:31]

اور یہ لکھا ہے  کہ آپ لوگ اپنے آپ کومجھ پر سربلند نہ سمجھیں اور میرے پاس آپ   زیرنگیں حالت میں  سلامتی سےآئیں‘‘۔

قَالَتْ يَـٰٓأَيُّـهَا ٱلْمَلَؤُا۟ أَفْتُونِـى فِـىٓ أَمْرِى مَا كُنتُ قَاطِعَةً أَمْرًا حَتَّىٰ تَشْهَدُونِ ٣٢

  • She said, "O you the Chiefs! You advise me in taking my decision; I have not been deciding and finalizing any matter until you people have considered it with me". [27:32]

ان محترمہ(ملکہ سبا)نے کہا’’معزز سردارو؛توجہ کریں!۔مجھے درپیش معاملے میں میری پنہاں کو جاننے میں معاونت کریں۔آپ جانتے ہیں کہ میں کسی بھی معاملہ کو حتمی نہیں کرتی جب تک آپ نے میرے ساتھ اس کا جائزہ نہیں لیا"۔

Root: ف ت ى; م ل ء; ق ط ع

قَالُوا۟ نَـحْنُ أُو۟لُوا۟ قُوَّةٛ وَأُو۟لُوا۟ بَأْسٛ شَدِيدٛ

  • They [hawks of her cabinet] said, "We are the possessors of force and we are possessors of mighty warring ability

انہوں نے کہا"ہم طاقت کے مالک ہیں اور ہم زبردست جنگی صلاحیت رکھتے ہیں۔

وَٱلۡأ​َمْـرُ إِلَيْكِ فَٱنظُرِى مَاذَا تَأْمُرِينَ ٣٣

  • However, the decision is with you, therefore, you take your own decision that which you will command." [27:33]

مگر معاملے کا فیصلہ کرنا آپ کی صوابدید ہے۔اس لئے آپ دیکھیں کہ آپ نے ہمیں کیا حکم دینا ہے"۔

قَالَتْ إِنَّ ٱلْمُلُوكَ إِذَا دَخَلُوا۟ قَرْيَةً أَفْسَدُوهَا وَجَعَلُوٓا۟ أَعِزَّةَ أَهْلِهَآ أَذِلَّةٙۖ

  • She [retaining composed cool queenly posture] said, "Indeed the kings when they entered a town they caused her upset, and they rendered the ruling elite of its inhabitants as the subjugated ones

ملکہ نے کہا"حقیقت یہ ہے کہ جب بادشاہ فاتح بن کر کسی بستی میں داخل ہوتے ہیں تو اس کو الٹ پلٹ کر دیتے ہیں۔اور اس بستی کے معززین  کو مغلوب،کمزور،گھٹیا قرار دے دیتے ہیں۔

Root: ذ ل ل; م ل ك

وَكَذَٟلِكَ يَفْعَلُونَ ٣٤

  • And this is how they will act [27:34]

اور تاریخ بتاتی ہے کہ وہ اسی طرح کا فعل کرتے ہیں۔

وَإِنِّـى مُرْسِلَةٌ إِلَيْـهِـم بِـهَدِيَّةٛ فَنَاظِرَةُۢ بِـمَ يَرْجِعُ ٱلْمُرْسَلُونَ ٣٥

  • And certainly I am about to send a message towards them with a gift whereupon I will wait and see what the emissaries return with." [27:35]

میں  ان کی جانب تحائف کے ساتھ خیر سگالی کا پیغام بھیجنے لگی ہوں۔اس کے بعد دیکھوں گی اس کے مطابق جوقاصد پیغام واپس لاتے ہیں"۔

فَلَمَّا جَآءَ سُلَيْمَٟنَ قَالَ أَتُمِدُّونَنِ بِمَالٛ فَمَآ ءَاتَىٰنِۦَ ٱللَّهُ خَيْـرٚ مِّمَّآ ءَاتَىٰكُـم

  • Thereby, when the message came to Sulie'maan [alai'his'slaam] he said, "Do you people induce me with wealth, then it will not work since what Allah the Exalted has given me is far better than what He the Exalted has granted to you people

ملکہ نے قاصد ارسال کر دئییے۔جوں ہی وہ سلیمان(علیہ السلام)کے دربار میں پہنچے تو انہوں نے ان سے کہا"کیا تم لوگ مال و دولت سے مجھے مرعوب کرنا چاہتے ہو۔تو پھر یہ جان لو کہ جو اللہ تعالیٰ نے مجھے عنایت کیا ہے وہ اس سے کہیں بہترین ہے جو انہوں نے تم لوگوں کو عنایت کیا ہے۔

بَلْ أَنتُـم بِـهَدِيَّتِكُـمْ تَفْرَحُونَ ٣٦

  • Nay, the fact is that you people are rejoicing with your gift. [27:36]

محض مرعوب کرنا نہیں ہے بلکہ تم لوگ اپنے تحفہ سے اپنی خوشحالی پر نازاں ہونے کا اظہار کر رہے ہو۔

Root: ف ر ح

ٱرْجِعْ إِلَيْـهِـمْ فَلَنَأْتِيَنَّـهُـم بِجُنُودٛ لَّا قِبَلَ لَـهُـم بِـهَا

  • You return to them, tell them that we will come to them with forces which they will not be able to confront them

ان سرداروں کی جانب لوٹ جاؤ۔چونکہ انہوں نے مرعوب کرنے کی کوشش کی ہے اس لئے ہم عنقریب ان کے پاس ایسے لشکروں کے ساتھ آئیں گے جن کا  اپنی موجودہ طاقت سےسامنا کرنا ان کے لئے ممکن نہیں ہو گا۔

وَلَنُخْرِجَنَّــهُـم مِّنْـهَآ أَذِلَّةٙ وَهُـمْ صَٟغِـرُونَ ٣٧

  • And certainly we will drive them out of it, defeatedand they will become belittled". [27:37]

اور یقیناً ہم انہیں ان کے گھمنڈ سے نکال باہر کریں گے ان پر غلبہ حاصل کر کے جس پر وہ اپنے آپ کو کم تر محسوس کریں گے"۔

Root: ذ ل ل; ص غ ر


قَالَ يَـٰٓأَيُّـهَا ٱلْمَلَؤُا۟ أَيُّكُـمْ يَأْتِينِى بِعَـرْشِهَا قَبْلَ أَن يَأْتُونِـى مُسْلِمِيـنَ ٣٨

  • He (Sulie'maan alai'his'slaam) said, "O you the Chieftains! Who of you could bring to me her throne before they arrive to me in state of yielding-peacemakers?" [27:38]

انہوں(سلیمان علیہ السلام)نے استفسار کیا"اے سرداروں!آپ میں کون ہے جو میرے پاس ان محترمہ کے شاہی تخت کو لے آئے اس سے قبل کہ وہ لوگ میرے پاس مطیع و فرمانبردار بن کر پہنچ جائیں؟‘‘

Root: ع ر ش; م ل ء

قَالَ عِفْرِيتٚ مِّن ٱلْجِنِّ أَنَا۟ ءَاتِيكَ بِهِۦ قَبْلَ أَن تَقُومَ مِن مَّقَامِكَۖ

  • Said Ifreet, a person of the Jinn species, "I will bring it to you before your rising from your seating place

عفریت نامی سردار جن کا تعلق جنات سے تھے نے کہا’’میں آپ کے پاس اس(تخت)کو لے آوں گا اسے قبل کے آپ اپنی نشست سے محفل برخواست کر کے اٹھیں۔

وَإِنِّـى عَلَيْهِ لَقَوِىٌّ أَمِيـنٚ ٣٩

  • And indeed I am certainly powerful upon doing it and am trustworthy in discharging responsibility." [27:39]

اور میں یہ کام انجام دینے کی قوت رکھتا ہوں اورذمہ داری کو نباھنے والا ہوں‘‘۔

قَالَ ٱلَّذِى عِندَهُۥ عِلْمٚ مِّنَ ٱلْـكِـتَٟبِ أَنَا۟ ءَاتِيكَ بِهِۦ قَبْلَ أَن يَرْتَدَّ إِلَيْكَ طَرْفُكَۚ

  • He who had been given some information/acquired knowledge from the certain book (Mother-Principal) by the grace of Him the Exalted said, "I will bring it to you before your wink turns to its original position towards you."

ایک سردار نے کہا جسے مخصوص کتاب(ام الکتاب)میں سے ان جناب  کی جانب سے معلومات/علم دیا گیا تھا’’میں آپ کے پاس اس(تخت)کو پہنچا دوں گا قبل اس کے کہ آپ   کی جھپک  آپ کی جانب اصل مقام پر پلٹے‘‘۔

فَلَمَّا رَءَاهُ مُسْتَقِرًّا عِندَهُۥ قَالَ هَـٰذَا مِن فَضْلِ رَبِّـى لِيَبْلُوَنِـىٓ ءَأَشْكُرُ أَمْ أَكْفُرُۖ

  • Therebyhaving been asked to go ahead, as soon he saw that throne placed by his side he said, "This is manifestation of the blessing of my Sustainer Lord so that He may expose me whether I am grateful or I am ungrateful

اجازت دینے کے بعد جوں ہی انہوں(سلیمان علیہ السلام)نے اسے(تخت) اپنے نزدیک ہی رکھا ہوا دیکھا تو انہوں نے کہا’’یہ(ایسے ماہرین علم کا میری کیبنٹ میں موجود ہونا)میرے رب کی جانب سے مجھ پر عنایات میں سے ایک ہے۔تاکہ وہ جناب مجھے آزنائیں اور ظاہر  کریں کہ کیا میں شکرگزار رہتا ہوں یاکفران فضل کرتا ہوں۔

Root: ط ر ف;  ق ر ر

وَمَن شَكَرَ فَإِنَّمَا يَشْكُرُ لِنَفْسِهِۦۖ

  • And know itwhoever expressed gratitude, indeed he expresses gratitude only for his own selfbenefit

اور یہ بات اپنی جگہ حقیقت ہے کہ جو  کوئی شکر ادا کرتا ہے تو صرف اپنے آپ کے مفاد میں شکرگزاری کرتا ہے۔

وَمَن كَفَـرَ فَإِنَّ رَبِّـى غَنِىّٚ كَرِيـمٚ ٤٠

  • And whoever concealed ungratefully then [he harms his own self] it makes no difference since my Sustainer Lord is the Absolute Independent, the Exalted". [27:40]

اور جس کسی نے عنایات پر ناشکری کا رویہ اپنایا تو یہ حقیقت مدنظر رہے کہ بلاشبہ میرے رب  ہر احتیاج سے منزہ بلند تر ہیں،وہ منبع کرم ہیں۔(النمل۔۴۰)

Root: ك ر م ك ف ر

قَالَ نَكِّرُوا۟ لَـهَا عَـرْشَهَا نَنظُرْ أَتَـهْتَدِىٓ أَمْ تَكُونُ مِنَ ٱلَّذِينَ لَا يَـهْتَدُونَ٤١

  • He ordered, "Render her throne to look unfamiliar for her, We would see and judge whether she recognizes - guides herself  or she remains one of those who guide not their-selves aright". [27:41]

انہوں(سلیمان علیہ السلام)نے حکم دیا’’ان محترمہ کے تخت کوآپ لوگ اس کے پہلی نظر کے لئے کچھ غیر معروف بنا دو،۔ہم دیکھنا چاہیں گے کہ آیا وہ دلچسپی لے کرسیدھی راہ کو سمجھتی ہے یا پھراس کا رویہ اور انداز ان لوگوں جیسا ہی ہے جو متمنی ہدایت نہیں ہوتےـ‘‘۔

Root: ع ر ش;  ن ك ر

فَلَمَّا جَآءَتْ قِيلَ أَهَكَذَا عَـرْشُكِۖ

  • Since preparations had already been made for her reception, therefore, as soon she arrived at reception point it was said, "Your throne, Madam Queen, please see this one?"

چونکہ ملکہ کے استقبال کی تیاریاں مکمل کر لی گئی تھیں اس لئے جوں ہی استقبالیہ مقام پر پہنچیں تو ان کے لئے کہا گیا’’آپ کا تخت،ملکہ محترمہ،اس کو دیکھیں‘‘۔

Root: ع ر ش

قَالَتْ كَأَنَّهُۥ هُوَۚ

  • She replied, "It is like as if it is that one.

انہوں(ملکہ)نے ایک نظر دیکھ کر کہا’’اس کی مماثلت تو ایسے ہے جیسے یہ وہ ہی ہے(یعنی میرا تخت)۔

وَأُوتِينَا ٱلْعِلْمَ مِن قَبْلِـهَا وَكُنَّا مُسْلِمِيـنَ ٤٢

  • And we were conveyed the information before undertaking journey, and we had decided to yield and be peace makers." [27:42]

اور ہمیں سفر شروع کرنے سے قبل معلومات مل چکی تھیں اور ہم مطیع و فرمانبردار بن کر امن و صلح سے رہنے کا فیصلہ کر چکے تھے‘‘۔

وَصَدَّهَا مَا كَانَت تَّعْبُدُ مِن دُونِ ٱللَّهِۖ

  • --Know it, that, which she used to worship other than Allah the Exalted, had averted her recognizing worldly realities.

۔۔ہم جناب بتاتے ہیں کہ(اچھی بھلی عقلمند خاتون تھیں)اس عادت نے جو وہ اللہ تعالیٰ کی بجائے کسی اورکی عبادت کرتی تھی اسے اردگرد کی دنیا سے دور کیا ہوا تھا۔۔

إِنَّـهَا كَانَتْ مِن قَوْمٛ كَٟفِرِينَ ٤٣

  • Indeed she was being held as Queen of a disbelieving nation --. [27:43]

۔۔یہ حقیقت ہے کہ اس کا شمار اللہ تعالیٰ کا انکار کرنے والی قوم میں کیا جاتا تھا۔۔

قِيلَ لَـهَا ٱدْخُلِـى ٱلصَّرْحَۖ

  • (reverting from parenthetic to reception ceremony) She was requested, "Please enter the Courtyard of Palace."

(جملہ معترضہ سے پلٹتے ہیں استقبالیہ تقریب کے متعلق)۔ان(ملکہ)کے لئے کہا گیا’’آپ محل کے صحن میں تشریف لے چلیں‘‘۔

Root: ص ر ح

فَلَمَّا رَأَتْهُ حَسِبَتْهُ لُجَّةٙ وَكَشَفَتْ عَن سَاقَيْـهَاۚ

  • Thereat, when she saw that (courtyard) she misjudged it as if it were a swell of water above surface; and she raised her trousers exposing her both legs from ankle to knee.

اس پر سواری سے اتر کر جوں ہی اس سے اسے(صحن)کو دیکھا تو اس نے گمان کیا جیسے سطح سے ابھرے پانی سے بھرا ہو۔اور اس خیال کی حالت میں اس نے اپنے نچلے پہناوے کو اٹھا کرٹخنوں سے گھتنوں تک اپنی پنڈلیوں کو ننگا کر دیا۔

Root: س و ق; ل ج ج; ك ش ف

قَالَ إِنَّهُۥ صَرْحٚ مُّمَـرَّدٚ مِّن قَوارِيرَۗ

  • Seeing her confusion and embarrassment by leg exposure he explained; "Actually this courtyard has been made smooth surfaced with glassing".

ان کی اس بے خیالی میں کی ہوئی حرکت اور خجالت کو محسوس کرتے ہوئے انہوں(سلیمان علیہ السلام)نے واضح کیا’’درحقیقت یہ ایسا صحن ہے جسے بالکل ہموار اور استوارشیشوں کے استعمال سے کیا گیا ہے‘‘۔

Root: ص ر ح;  ق ر ر;  م ر د

قَالَتْ رَبِّ إِنِّـى ظَلَمْتُ نَفْسِى

  • (the difference between conjecture and reality opened the window of reason) She immediately said; "O my Sustainer Lord, it is fact that by following conjecture and imagination instead of reality I did wrong myself

(گمان اور حقیقت کے فرق نے عقل کے دریچے کھول دئیے)اس(ملکہ)نے فوراً کہا’’اے میرے رب! یہ حقیقت ہے کہ میں نے حقیقت کی بجائے تخیل اور گمان کو اپنا پر اپنے آپ پر زیادتی کی ہے۔

وَأَسْلَمْتُ مَعَ سُلَيْمَٟنَ لِلَّهِ رَبِّ ٱلْعَٟلَمِيـنَ ٤٤

  • And I have now submitted myself to the Code of conduct Islam, in the presence of Sulie'maan [alai'his'slaam], exclusively for Allah the Exalted, the Sustainer Lord of the Worlds - All that exists". [27:44]

اور میں سلیمان(علیہ السلام)کی معیت میں   مطلق اللہ تعالیٰ کے حضور پرخلوص انداز میں سرنگوں ہو گئی ہوں،وہ جناب تمام موجودات کے مطلق رب ہیں‘‘۔


وَلَقَدْ أَرْسَلْنَآ إِلَـىٰ ثَمُودَ  أَخَاهُـمْ صَٟلِحًا

  • And Our Majesty had indeed deputed towards Sa'mued their brother Saleh [alai'his'slaam] as the Messenger  

اورہم جناب نے صالح (علیہ السلام)کو،جو ان کے قومی بھائی تھے ،قوم  ثمودکی جانب اپنا رسول بنایا تھا۔

أَنِ ٱعْبُدُوا۟ ٱللَّهَ

  • To persuade them: "You people be exclusively subservient-allegiant to Allah the Exalted.

انہوں نے کہا"اے میری قوم،تم لوگ اللہ تعالیٰ کی  بااظہار بندگی کرو"۔

فَإِذَا هُـمْ فَرِيقَانِ يَخْتَصِمُونَ ٤٥

  • Thereat, when he